اساتذہ کی ترقی روکنے والے ای ڈی اوز کیخلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کارروائی کا فیصلہ

اساتذہ کی ترقی روکنے والے ای ڈی اوز کیخلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کارروائی کا فیصلہ

  

لاہور( لیاقت کھرل) محکمہ تعلیم کی جانب سے صوبے بھر کے سرکاری تعلیمی اداروں میں تین لاکھ سے زائد اساتذہ کی ان سروس پروموشن اور سالانہ پے پیکیج پر عمل درآمد کو یقینی بنانے کے لئے ای ڈی اوز کو 15 مارچ تک کی ڈیڈ لائن دے دی گئی ہے، جس میں اساتذہ کی سالانہ کارکردگی کی رپورٹ اے سی آرز کا بہانہ بنا کر سنیارٹی لسٹ تیار نہیں ہو سکی جس سے جہاں ہزاروں اساتذہ کی سالانہ ترقیاں رک جانے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے، وہاں متعدد ای ڈی اوز کے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کارروائی کے لئے شکنجہ بھی تیار کر لیا گیا ہے۔ محکمہ تعلیم کے ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سیکرٹری تعلیم پنجاب عبدالجبار شاہین کو رپورٹ پیش کی گئی ہے کہ لاہور سمیت پنجاب بھر کے اضلاع میں چار سال سے ان سروس پروموشن اور سالانہ پے پیکیج پر عملدرآمد نہ ہونے پر اساتذہ کی ترقیوں کا عمل رک چکا ہے، متعدد اساتذہ ترقی کی راہ تکتے تکتے پرانے سکیلوں پر ریٹائرڈ بھی ہو چکے ہیں جبکہ اس سال بھی اساتذہ کی ان سروس پروموشن نہ ہونے پر ہزاروں اساتذہ ترقی حاصل کیے بغیر ریٹائرڈ ہو جائیں گے ۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ترقی کے خواہش مند اساتذہ میں پرائمری سکول ٹیچرز ( پی ایس ٹی) کی تعداد سب سے زیادہ ہے جو کہ گریڈ 9 سے گریڈ 14 میں ای ایس ٹی کے عہدہ پر ترقی کی امید لیے بیٹھے ہیں جبکہ دوسرے نمبر پر ایلیمنٹری سکول ٹیچر ( ای ایس ٹی) جو کہ گریڈ 14 سے گریڈ 16 پر ایس ایس ٹی ٹیچر کے عہدہ پر ترقی کے خواہش مند ہیں اور اسی طرح ایس ایس ٹی کے گریڈ 16 سے ہیڈ ماسٹر کے عہدہ پر گریڈ 17 کے عدہ پر ترقی کے لئے اپنی اے سی آرز مکمل کر کے باقاعدہ فائلیں جمع کروا چکے ہیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ سیکرٹری تعلیم کو رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ای ڈی اوز کی سست روی اور نااہلی کے باعث ڈی ای اوز ، ڈپٹی ڈی ای اوز سمیت سکولوں کے سربراہوں نے دو لاکھ سے زائد اساتذہ کی سالانہ کارکردگی کی خفیہ رپورٹ اے سی آرز تک پر دستخط نہیں کیے اور پسند نہ پسند کی بنیاد پر اے سی آرز تیار کرنے کا سلسلہ جاری ہے جس کا سیکرٹری تعلیم پنجاب عبدالجبار شاہین نے پیش ہونے والی رپورٹ پر سخت نوٹس لے لیا ہے اور لاہور سمیت پنجاب بھر میں محکمہ تعلیم کے ضلعی سربراہوں ای ڈی اوز کو اساتذہ کی ان سروس پروموشن اور سالانہ پے پیکیج پر عمل درآمد کو یقینی بنانے کے لئے 15 مارچ تک کی ڈیڈ لائن دے دی ہے۔ اس حوالے سے سیکرٹری تعلیم عبدالجبار شاہین نے ’’ پاکستان‘‘ کو بتایا کہ ترقی میں رکاوٹ کے حامل ای ڈی اوز کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ اس میں محکمانہ سزاؤں، معطلی اور عہدوں سے فارغ کیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ آخر -