پاکستان اور افغانستان کو خطے میں امن کے لیے مل کر کام کرنا ہوگا: نواز شریف

پاکستان اور افغانستان کو خطے میں امن کے لیے مل کر کام کرنا ہوگا: نواز شریف

  

اسلام آباد (آن لائن ) وزیراعظم میا ں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ افغانستان میں امن خطے کے مفاد میں ہے پائیدار امن اور ترقی کے لیے جامع اور پائیدار شراکت داری ضروری ہے ،پاکستان اور افغانستان کو خطے میں امن کے لیے ملکر کام کرنا ہو گا ،دہشت گرد دونوں ممالک کے مشترکہ دشمن ہیں ،ان خیالا کا اظہار انہوں نے یہاں وزیراعظم ہاؤس میں افغانستان کے سپیکر عبدالراؤف ابراہیمی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں امن کا خواہاں ہے اور امن اور مفاہمت کے لیے مخلصانہ کوشش کر رہا ہے اور افغانوں پر مشتمل مفاہمتی عمل کی مکمل حمایت کرتا ہے ، چار فریقی گروپ افغان طالبان اور قیادت کے درمیان مفاہمت کے لیے درست سمت پر کام کر رہا ہے ، وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان افغانستان کی ترقی میں خصوصی دلچسپی لے رہا ہے اور افغانستان کے بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے لیے تعاون کرنے کو تیار ہیں اور باہمی اعتماد کو فروغ دے کر افغانستان کے ساتھ سلامتی ،انسداد دہشت گردی ، تجات ،اور معاشی ترقی سمیت مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانا چاہتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ حکومت افغان مہاجرین کی باعزت اور وقار کے ساتھ واپسی کی خواہاں ہے اور اسے یقینی بنائیں گے ۔ اس موقع پر افغانستان کے سپیکر عبدالراؤف ابراہیمی نے وزیراعظم کی بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے لیے تعاون کی پیش کش کا خیر مقدم کرتے ہوئے شکریہ ادا کیا ہے ،انہوں نے کہا کہ پاکستان نے ہر مشکل وقت میں افغانستان کا ساتھ دیا افغانستان کی عوام پاکستان کو اپنا دوسرا گھر سمجھتے ہیں،پاکستانی قوم نے افغان مہاجرین کو مجت کے ساتھ رکھا،گزشتہ 30سال سے افغان مہاجرین کی میزبانی پر پاکستان کے مشکور ہیں ، انہوں نے کہا کہ پاکستا ن نے 1978میں بیرونی جارحیت کیخلاف افغانستان کا ساتھ دیا ، وزیراعظم کی افغانستان میں امن عمل کے لیے ویژن اور پالیسی قابل تعریف ہے ، وزیراعظم کا نقطہ نظر اور پالیسی واضح ہے ،افغان سپیکر کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان کی عوام کے لیے دوسرا گھر ہے ہمیں ہر حال میں ایک دوسرے کا مضبو ط دوست رہنا ہے ، افغانستان کے دوست پاکستان کے دوست افغانستان کے دشمن پاکستان کے دشمن ہیں ،دہشت گرد ی سمیت تمام چیلجز کا ملکر مقابلہ کرنا ہوگا۔ بھارتی ہائی کمشنر گوتم بمباوالے سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ پاکستان بھارت سمیت تمام پڑوسی ممالک سے خوشگوار تعلقات کی پالیسی پر عمل پیر اہے ،باہمی تعاون سے پاک بھارت کو سماجی اور اقتصادی فوائد حاصل ہوں گے ،وزیراعظم نے بھارتی ہائی کمشنر کا وزیراعظم ہاؤس آمد پر زبردست انداز میں استقبال کیا اور انکی تعیناتی کا خیر مقدم کرتے ہوئے ان سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے کردار ادا کرنے کی امید کا اظہار بھی کیا ، وزیراعظم اور بھارتی ہائی کمشنر کے درمیان ملاقات 30منٹ تک جاری رہی جس میں دو طرفہ تعلقات ،پٹھا ن کوٹ حملہ ، پاک بھارت مذاکرات سمیت دیگر اہم امور پر تبالہ خیال کیا گیا ہے ، وزیرا عظم نے کہا کہ خطے میں امن کے لیے پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات میں بہتری ناگزیر ہے ، دونوں ممالک کو مسائل کے حل کا راستہ مذاکرات کے زریعے ڈھو نڈنا ہوگا ،مسائل کے حل کا واحد راستہ مذاکرات ہیں پاکستان بھارت سے تمام تصفیہ طلب مسائل کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہتاہے ، موجود حکومت بھارت سمیت تما م پڑوسی ممالک سے خوشگوار تعلقات کا کی خوہاں ہے ، اور امن کی پالیسی پر عمل پیرا ہے ،

نواز شریف

اسلام آباد (آئی این پی) وزیر اعظم نواز شریف نے پاک بھارت سیکرٹری خارجہ مذاکرات کی بحالی پر زور دیتے ہوئے کہ دونوں ممالک کے مسائل صرف بات چیت سے حل ہو سکتے ہیں،پاکستان بھارت سمیت تمام ہمسائیہ ممالک سے بہتر تعلقات چاہتا ہے،دونوں ممالک میں باہمی تعلقات سے سماجی اور اقتصادی فواہد حاصل ہو سکتے ہیں، دہشت گرد مشترکہ دشمن ہیں، مل کر لڑنا ہو گا۔بدھ کو وزیر اعظم نواز شریف سے پاکستان میں تعینات بھارتی ہائی کمشنر گوتم بمباوالے نے ملاقات کی جس میں پاک بھارت تعلقات ،پٹھان کوٹ واقعہ پر ہونے والی پیش رفت سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی بھی موجودتھے۔ وزیراعظم نواز شریف نے پاک بھارت تعلقات کو مستحکم بنانے کے حوالے سے اس بات پر بھی زور دیا کہ بھارت کودہشت گردی کے واقعات کو مذاکرات کے عمل میں رکاوٹ کا ذریعہ بنانے سے گریز کر نا چاہئے تاکہ دونوں ممالک کے درمیان جامع مذاکرات کا سلسلہ شروع ہو سکے۔ پاکستان بھارت سمیت تمام ہمسایوں سے بہتر تعلقات کی پالیسی پر عمل پیرا ہے،پاکستان اور بھارت کے باہمی تعلقات سے دونوں ممالک کے عوام یکساں فوائد اٹھا سکتے ہیں۔دونوں ممالک میں باہمی تعلقات سے سماجی اور معاشی فوائد حاصل ہوں گے۔ وزیراعظم نواز شریف نے بھارت کے نئے ہائی کمشنر گوتم بمباوالے کا خیر مقدم کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ یقین ہے کہ گوتم بمباوالے دونوں ممالک کو ایک دوسرے کے قریب لانے میں اہم کردار ادا کریں گے۔ وزیراعظم نے کہا کہ دونوں کے مسائل صرف بات چیت کے ذریعے ہی حل ہو سکتے ہیں۔پٹھان کوٹ واقعہ پر مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی تھی۔ خطے میں امن و ترقی کیلئے مشترکہ جدوجہد کی ضرورت ہے۔دہشت گرد مشترکہ دشمن ہیں، ان کے خلاف مل کر لڑنا ہو گا۔ بھارتی ہائی کمشنرگوتم بمباوالے نے پاک بھارت تعلقات میں بہتری پر وزیراعظم کے کردار کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے تعلقات معمول پر لانے اور مستحکم بنانے میں کردار ادا کروں گا

مزید :

صفحہ اول -