ہتھیاروں کی دوڑ میں شامل نہیں ہوں گے، ایٹمی صلاحیت برقرار رہیگی،قومی سلامتی کو لاحق کسی بھی خطرے کا موثر جواب دینگے: کمانڈر اینڈ کنٹرول اتھارٹی

ہتھیاروں کی دوڑ میں شامل نہیں ہوں گے، ایٹمی صلاحیت برقرار رہیگی،قومی سلامتی ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) وزیراعظم محمد نواز شریف کے زیر صدارت نیشنل کمانڈ اتھارٹی کا اجلاس ہوا جس میں سیاسی اور فوجی قیادت نے روایتی اور جوہری ہتھیاروں میں اضافے سے خطے میں امن و سلامتی کو خطرات پر تشویش کا اظہار کیا۔ نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے قابل اعتماد جوہری صلاحیت برقرار رکھنے کا عزم دہراتے ہوئے کہا کہ ہتھیاروں کی دوڑ میں شامل ہوئے بغیر قومی سلامتی کو لاحق کسی بھی خطرے کا موثر جواب دیا جائے گا۔ نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے جوہری کمانڈ اینڈ کنٹرول سسٹم پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا پاکستان نیوکلیئر سپلائر گروپ کا رکن بننے کے معیار پر پورا اترتا ہے۔ گروپ کی رکنیت دینے میں امتیازی رویہ ختم کیا جائے۔ اتھارٹی نے حالیہ کامیاب میزائل تجربات پر سائنسدانوں اور انجینئرز کو مبارکباد دی۔اجلاس میں کہا گیا کہ اسلحہ کی دوڑ سے خطے میں امن وسلامتی پر سنگین مضمرات ہونگے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی طرف سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق وزیراعظم نوازشریف کی زیر صدارت 22 ویں نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول اتھارٹی کا اجلاس ہوا جس میں مسلح افواج کے سربراہان،چےئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی ،مشیر خارجہ سرتاج عزیز ،ڈی جی اسٹریٹجک پلانز ڈویژن ،وزیر دفاع خواجہ آصف اور وزیر داخلہ چوہدری نثار اور دیگر حکام نے شرکت کی۔اجلاس میں علاقائی اور عالمی سیکورٹی کی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں خطے میں روایتی اسٹریٹجک ہتھیاروں کی بڑھتی ہوئی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا گیا ۔نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے کم سے کم جوہری صلاحیت کی پالیسی پر عمل پیرا رہنے کے عزم کا اظہار کیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق جنوبی ایشیا میں استحکام کیلئے کم سے کم دفاعی صلاحیت ضروری ہے ۔پاکستان خطے میں اسٹریٹجک تحمل کی فضاء کا حامی ہے ۔پاکستان کم سے کم دفاعی صلاحیت کو برقرار رکھے گا۔اسلحہ کی دوڑ سے امن وسلامتی پر سنگین مضمرات ہونگے۔اسلحے کی دوڑ میں شامل ہوئے بغیر درپیش خطرات سے موثر انداز میں نمٹا جائے گا۔نیشنل کمانڈاتھارٹی نے بلاسٹک اور کروز میزائل کے کامیاب تجربات پر ماہرین کو مبارکباد پیش کی۔اجلاس میں شرکاء کوواشنگٹن میں جوہری سلامتی سربراہ کانفرنس سے متعلق آگاہ کیا گیا اور کہا گیا کہ پاکستان نیوکلےئر سپلائر گروپ جیسے عالمی فورسز کا رکن بننے کامکمل اہل ہے ۔عالمی فورسز میں غیر امتیازی پالیسی پر عمل ہونا چاہیے۔دیرینہ مسائل حل کرکے ہی خطے میں امن وخوشحالی ممکن ہے ۔نیشنل کمانڈ اتھارٹی کو پاکستان کی نیوکلےئر میٹریل کی مکمل حفاظت کے کنونشن کے ترمیمی مسودے کی تفصیلات پیش کی گئیں۔کمانڈ اتھارٹی نے جوہری تحفظ کے ترمیمی کنونشن کی توثیق کرنے کی منظوری دیدی۔نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے نیوکلےئر پروگرام کی سلامتی اور حفاظت کے طریقہ کار کا مکمل جائزہ لیا اور اسٹریٹجک اثاثوں اورتنصیبات کی انتہائی موثر سیکورٹی کو یقینی بنانے کیلئے کیے جانے والے اقدامات پر مکمل اطمینان کا اظہارکیا ۔

مزید :

صفحہ اول -