مسلم ؛یگ ن آزاد کشمیر انتخابات میں بگرپور تیاری کے ساتھ مقابلہ کریگی ؛ پرویز رشید

مسلم ؛یگ ن آزاد کشمیر انتخابات میں بگرپور تیاری کے ساتھ مقابلہ کریگی ؛ پرویز ...

  

 اسلام آباد(آن لائن) وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات پرویز رشید نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) آزاد کشمیر کے انتخابات میں بھرپور تیاری کے ساتھ مقابلہ کرے گی ، کشمیری عوام مسلم لیگ (ن) کے کردار اور کارکردگی کی بناء پر ووٹ دینگے جو ادارے سیاسی جواب نہیں دے سکتے سیاسی جماعتیں ان سے متعلق بیانات نہ دیئے جائیں، ملک میں انتہا پسندی کی سوچ بدلنے کیلئے اعتدال پسندوں کو آگے آنا ہوگا سوشل سائنسز تعلیم انتہا پسندی کی سوچ کو بدل سکتی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز اسلام آباد میں سوشل سائنسز ایکسپو کی تقریب سے خطاب اور بعد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سوشل سائنسز کی تعلیم سے لوگوں کے دن بدلے جاسکتے ہیں اس لئے سوشل سائنسز پڑھانے کا مقصد انسان اور معاشرے کو تہذیب یا فتہ بنانا ہے اور دہشتگردی اور انتہا پسندی کی سوچ کو بدلنا ہوگا انہوں نے کہا کہ دہشتگردوں کیخلاف ضرب عضب میں ہماری قربانیوں کو پوری دنیا نے تسلیم کیا ہے عقیدے کی بنیاد پر ایک دوسرے کو تقسیم نہ کریں اور نفرتیں نہ پھیلائیں ایک دوسرے کے عقائد کا احترام کریں اعتدال پسند طبقہ کو آگے آکر معاشرے کی سوچ کو تبدیل کرنا ہوگا ۔ بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پرویز رشید نے کہا کہ کشمیر کے انتخابات کا نتیجہ بیلٹ بکس سے نکلے گا مسلم لیگ (ن) الیکشن میں بھرپور حصہ لے گی اور مقابلہ کرے گی انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ نواز نے پاکستان اور آزاد کشمیر کی بھی خدمت کی ہے کشمیر میں ہماری جدوجہد سے کشمیر کے لوگ واقف ہیں مسلم لیگ نواز کی کارکردگی دیکھ کر لوگ ووٹ ہمیں دینگے انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی جہاں حکومت ہے وہاں کی ترقی کا اعتراف دنیا بھر میں لوگ کرتے ہیں آزاد کشمیر کے لوگ بھی چاہتے ہیں کہ آزاد کشمیر میں بھی ایسی ترقی ہو ملک بھر میں آصف علی زرداری کے پہلے اور اب آنے والے بیان پر تبصرے کئے جارہے ہیں پاکستان کو اس وقت سیاسی بیانات کی ضرورت کم عملی کام کی ضرورت زیادہ ہے انہوں نے کہا کہ پانچ سال پہلے پیپلز پارٹی نے ملک میں کام کئے ہوتے تو آج ہم ان کو آگے لے کر جاتے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کو اداروں کا احترام کرنا چاہیے جو ادارے سیاسی جواب نہیں دے سکتے ان سے متعلق بیانات نہیں دینے چاہیں ان اداروں کے متعلق ایسی بحث سے اداروں کا کام متاثر ہوتا ہے

مزید :

پشاورصفحہ اول -