سندھ میں احتساب کمیشن کا انجام بھی کے پی کے جیسا ہوگا، علی اکبر گجر

سندھ میں احتساب کمیشن کا انجام بھی کے پی کے جیسا ہوگا، علی اکبر گجر

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ (ن) سندھ کے نائب صدر علی اکبر گجر نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کے احتساب کمیشن کا انجام بھی خیبرپختونخواجیسا ہوگا۔سندھ اور خیبرپختونخوا کی حکومتیں احتساب میں سنجیدہ نہیں اس لئے نیب کی موجودگی میں اپنے اپنے احتساب کمیشن بنا کر متوازی احتسابی نظام قائم کرنا چاہتی ہیں تاکہ اپنی کرپشن کہانیوں پرپردہ ڈال سکیں اوراپنے کرپٹ وزراکوتحفظ فراہم کرسکیں۔گزشتہ روز سندھ حکومت نے عندیہ ظاہر کیا ہے کہ احتساب کمیشن خودمختیارہوگا اور اس کا سربراہ ریٹائر جج یا بیوروکریٹ ہوگا۔یہی تجربہ عمران خان کی جماعت اپنے صوبے میں کرچکی ہے لیکن وہاں یہ تجربہ بری طرح سے ناکام رہا۔خیبرپختونخوا میں ایک ریٹائر جنرل کو احتساب کمیشن کی سربراہی دی گئی لیکن انہیںآزادانہ اورغیرجانبدارانہ طورپر کام نہیں کرنے دیا گیا تو وہ استعفی دے کراپنی عزت بچاکر چلتے بنے۔انہوں نے کہا کہ سندھ میں بھی احتساب کمیشن کا یہی حشر ہوگا اور اس کی سربراہی کے لئے ایسے منظورنظرشخص کا انتخاب کیا جائے گا جو صوبائی حکمران جماعت کے وڈیروں کے کالے کرتوتوں کوشفافیت کی سندعطا کرسکے۔سندھ اور خیبرپختونخوا میں سرکاری اداروں اورمنصوبوں میں اربوں روپے کی کرپشن اورلوٹ کھسوٹ سامنے آئی ہے جس کے احتساب کی خبروں کے بعد صوبائی حکمران جماعتوں میں کھلبلی مچ گئی ہے اور وہ ڈمی احتسابی ادارے بنا کر اپنے لوگوں کو کلین چٹ تھمانا چاہتے ہیں لیکن ان کی یہ خواہش کبھی پوری نہیں ہوگی۔علی اکبرگجرنے کہا کہ ملک میں بدعنوانیوں کابازار گرم ہے خاص طور پر خیبرپختونخوا اور سندھ نے کرپشن کے سارے ریکارڈ توڑ دئیے ہیں۔ وفاقی حکومت نے ملک میں معاشی دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں کا آغازکیا ہے تو پاکستان پیپلزپارٹی اور تحریک انصاف اس عمل کو سبوتاژ کرنے کے لئے ایک ہوگئی ہیں۔وفاقی حکومت شفاف اوربے رحم کے حق میں ہے اس لئے جو بھی اس عمل کی راہ میں آئے گا،بچ نہیں پائے گا۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -