قومی یونیورسٹی برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ترمیمی بل 2016ءکثرات رائے سے منظور

قومی یونیورسٹی برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ترمیمی بل 2016ءکثرات رائے سے منظور
قومی یونیورسٹی برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ترمیمی بل 2016ءکثرات رائے سے منظور

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) قومی یونیورسٹی برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ترمیمی بل 2016ءکثرت رائے سے منظور کر لیا گیا ہے۔بل کے حق میں 61 جبکہ مخالفت میں 35 ووٹ آئے۔ تفصیلات کے مطابق سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی زیر صدارت اجلاس میں رکن قومی اسمبلی زاہد حامد نے قومی یونیورسٹی برائے سائنس اینڈ ٹکینالوجی ترمیمی بل2016 ءپیش کیا جسے کثرت رائے سے منظور کر لیا گیا۔ ذرائع کے مطابق بل پیش کرنے پر پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف نے اس کی مخالفت کی جس پر زاہد حامد کا کہنا تھا کہ یہ صرف تنقید برائے تنقید ہے کیونکہ پہلے کسی یونیورسٹی کے بل میں وہ چیزیں شامل نہیں جو اپوزیشن کہہ رہی ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -