بارڈر کی بندش منفی پالیسی، خطے میں قیام امن کیلئے پاک افغان دوستی کے سوا کوئی آپشن نہیں: سراج الحق

بارڈر کی بندش منفی پالیسی، خطے میں قیام امن کیلئے پاک افغان دوستی کے سوا کوئی ...

لاہور(وقائع نگار)سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان جو قوتیں نفرت پیداکرنے کی کوششیں کررہی ہیں در اصل وہ دونوں ممالک کی دشمن ہیں ،خطے میں قیام امن اور استحکام کیلئے پاک افغان دوستی کے علاوہ کوئی آپشن نہیں۔انہوں نے کہا کہ جب بھی کوئی واقعہ ہوجاتاہے تو بارڈر بند کردیا جاتا ہے یہ مسائل کا حل نہیں بلکہ منفی پالیسی ہے اور دونوں ممالک کو چاہئے کہ افہام و تفہیم کے ساتھ اس قسم کے مسائل کا مستقل حل نکالیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے المرکز الاسلامی پشاور میں افغان مہاجرین اور تاجروں کے نمائندہ وفد سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،وفد کی قیادت بریالے میانخیل ،عبد الحمید جلیلی ،ملک علی خان ،امان اللہ خان اور دیگر نے کی جبکہ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی خیبرپختونخوا عبدالواسع اور سینیٹرسراج الحق کے افغان امور کے مشیر شبیر احمد خان بھی موجود تھے ۔امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ شیطانی قوتیں امت مسلمہ کو تقسیم کرنا چاہتی ہیں حالانکہ افغان عوام نے دنیا کے ہرمظلوم کو آزادی کا راستہ دکھایا ہے اور پوری امت باالخصوص پختون قوم کا شملہ بلند کیا،انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات مستقل نہیں افغانستان اور پاکستان کے درمیان بھائی چارے کی فضاء دوبارہ قائم ہوگی،پاکستان وافغانستان کے درمیان نفرت پیداکرنے والے ہمارے دشمن ہیں ،پاک افغان دوستی کے علاوہ کوئی آپشن نہیں۔انہوں نے وفد کو یقین دلایا کہ وہ مرکزی حکومت سے بھی اس حوالے سے بات کریں گے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...