امریکی گن مین نے ایک بھارتی انجینئر کو ہلاک دوسرے کو زخمی کر دیا

امریکی گن مین نے ایک بھارتی انجینئر کو ہلاک دوسرے کو زخمی کر دیا

کنساس (اظہر زمان، بیورورپورٹ) کنساس سٹی کے ایک ریستوران میں ایک گن مین نے نشانہ بنا کر ایک بھارتی نوجوان کو ہلاک اور دوسرے کو زخمی کر دیا۔ ایف بی آئی کے ذرائع نے یہاں یہ اطلاع دیتے ہوئے بتایا کہ ان کی ایجنسی مقامی پولیس حکام کے ساتھ مل کر ایک نفرت اور نسلی تعصب کے جرم کے طور پر اس کی تفتیش کر رہی ہے۔ 51 سالہ سفید فام آدم پرنٹن کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ ہلاک ہونے والے 32 سالہ نوجوان کا نام سریتی واس کوچیھوتلا ہے، جو ایک مقامی فرم میں بطور انجینئر کام کرتا تھا۔ اس کے ساتھ زخمی ہونے والا بھی بھارتی انجینئر تھا جس کا نام الوک مداسانی ہے۔ پولیس معلومات کے مطابق حملہ آور ایک سابق فوجی تھا جو حملہ کرتے وقت پورے زور سے چلا چلا کر کہہ رہا تھا کہ ’’میرے ملک سے نکل جاؤ‘‘ اسی وجہ سے اس کی معاملے کی تفتیش ’’دہشت گردی کارروائی‘‘ کے طور پر کی جا رہی ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ایک سفید فام نوجوان ایان گریلٹ نے آگے بڑھ کر حملہ آور کو روکنے کی کوشش کی جس سے وہ خود بھی زخمی ہوگیا اور اس وقت ہسپتال زیر علاج ہے۔ اس وقت امریکہ میں بہت سے امیگریشن صدر ٹرمپ کی پالیسیوں اور زبان پر تشویش کا اظہار کر رہے ہیں، جنہوں نے امیگریشن کی پابندیاں لگانے اور بغیر دستاویزات کے تارکین وطن کو ملک بدر کرنے کا عمل تیز کرنے کی ہدایات دے رکھی ہیں۔ واشنگٹن میں بھارتی سفارت خانے کے ایک ترجمان نے اس واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ نفرت پر مبنی اس دہشت گرد کارروائی کی مناسب تفتیش کی جائے۔

مزید : صفحہ اول


loading...