اکاؤنٹنٹ جنرل خیبر پختونخوا اور نیشنل بنک کے صدر کے مابین ملاقات

اکاؤنٹنٹ جنرل خیبر پختونخوا اور نیشنل بنک کے صدر کے مابین ملاقات

پشاور( سٹاف رپورٹر )اکاؤنٹنٹ جنرل خیبرپختونخوااورپریزیڈنٹ نیشنل بینک آف پاکستان کراچی کے مابین ملاقات ہوئی جس میں اکاؤنٹس کی ری کنسلیشن اورپنشنرزکے مسائل کی فی الفورحل کے حوالے سے بات چیت ہوئی۔پریزیڈنٹ نیشنل بینک آف پاکستان نے اکاؤنٹس کی ری کنسلیشن کے سلسلے میں اکاؤنٹس جنرل کی کاوشوں کوسراہتے ہوئے کہاکہ جسطرح باقاعدگی سے وہ اپنے ٹیم کونیشنل بینک اکاؤنٹس کی ری کنسلیشن کیلئے بھیجتے ہیں اس سے ظاہرہوتاہے کہ اکاؤنٹنٹ جنرل اکاؤنٹس کی درستگی پرخاص توجہ دیتے ہیں۔ پنشنرزکی بلاواسطہ (ڈائریکٹر)کریڈٹ سسٹم پرمنتقلی کے بارے میں گفتگوکے دوران اس بات پراتفاق کیاگیاکہ 31مارچ2017تک تمام BPS-17اوراس سے اوپراور30جون2017تک تمام،BPS-1سےBPS-16تک کے پنشنرزکوڈائریکٹ کریڈسسٹم پر منتقل کیا جائیگا۔اکاؤنٹنٹ جنرل نے نیشنل بینک کی برانچزمیں درپیش مشکلات کابھی ذکرکیا۔پریزیڈنٹ نیشنل بینک آف پاکستان نے پنشنرزکو ڈائریکٹ کریڈٹ سسٹم پرمنتقل کرنے کے سلسلے میں اکاؤنٹ جنرل کی کوششوں کوسراہااورہرقسم کے تعاون کی یقین دہانی کرائی تاہم اس تمام پنشنرزحضرات سے بھی استدعاکی گئی کہ وہ اپنے متعلقہ اکاؤنٹ آفس اورمتعلقہ NBPبرانچ سے جلدازجلدرابطہ کرے تاکہ انکی پنشن ڈائریکٹ کریڈٹ سسٹم پرمنتقل کی جائے۔اکاؤنٹنٹ جنرل نے اکاؤنٹس کی ری کنسلیشن اورپنشنرزکی ڈائریکٹ کریڈٹ سسٹم پرمنتقلی میں پریزیڈنٹ NBPاورانکے عملے کے تعاون کرسراہتے ہوئے انکاشکریہ اداکیا۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...