جنرل باجوہ افغانستان سے تعلقات بہتر بنا رہے ہیں،میاں زاہد

جنرل باجوہ افغانستان سے تعلقات بہتر بنا رہے ہیں،میاں زاہد

کراچی (اکنامک رپورٹر)پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر ،بزنس مین پینل کے سینیئر وائس چےئر مین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ ملک میں دہشت گردی کی حالیہ لہر کے تناظر میں مسلح افواج کے سربراہ جنرل قمر باجوہ کی جانب سے عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن رد فساد کا آغاز خوش آئند ہے۔ ملک بھر کی کاروباری برادری پاک فوج اور حکومت کے ساتھ ہے اور کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کریگی۔ میاں زاہد حسین نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ عوام اور کاروباری برادری کو مسلح افواج سے بڑی امیدیں وابستہ ہیں اور وہ کبھی دہشت گردوں کو عوام کو ہراساں کرنے ، ملکی ترقی کا عمل متاثر کرنے اور اقتصادی راہداری کے منصوبے کو سبوتاژ کرنے کی اجازت نہیں دینگے۔ ملک بھر میں غیر قانونی اسلحے اور بارودی موادکے خلاف مہم اور پنجاب میں رینجرز کو پولیس کے اختیارات دے کر تعینات کرنا خوش آئند ہے کیونکہ کراچی میں عوام اور کاروباری برادری رینجرز کے کردار سے مطمئن ہیں اورکراچی کی روشنیاں لوٹانے کا سارا سہرا رینجرز کے سر ہے۔ انھوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ جیتنے کیلئے پاکستان اور افغانستان کا ایک صفحے پر ہونا ضروری ہے جبکہ حکومت کے جانب سے فوج کو پڑوسی ملک میں کاروائی کی اجازت دینا خوش آئند ہے۔ حال میں بری افواج کے سربراہ نے جو بیانات جاری کیئے ہیں ان سے افغانستان کے بارے میں پالیسی کی تبدیلی اور تعاون میں اضافے کا پتہ چلتا ہے جس سے دونوں ممالک کے سیکورٹی ادارے اور عوام قریب آئیں گے۔انھوں نے کہا کہ پشاور کے اسکول پر دہشت گردوں کے حملے کے بعد نیکٹاسے بڑی امیدیں وابستہ کی گئی تھیں مگر یہ غیر فعال محکمہ زبانی جمع خرچ کے علاوہ کچھ نہ کر سکا اسلئے اس پر مزید وسائل ضائع نہ کیئے جائیں۔ انھوں نے کہا کہ دہشت گردی کو ہوا دینے والی تنظیموں اور شخصیات کے خلاف سخت کاروائی کی جائے۔ اس سلسلے میں وزیر اعظم میاں نواز شریف اور جنرل باجوہ کو بزنس کمیونٹی کے بھر پور تعاون اور حمایت کا یقین دلاتے ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...