دنیا کا شرمناک ترین ہوٹل کھولنے کا فیصلہ جہاں جسم فروش خواتین سے بھی دو قدم بڑھ کر ایسی سہولت مہیا کی جائے گی کہ سن کر ہی انسان توبہ پر مجبور ہوجائے

دنیا کا شرمناک ترین ہوٹل کھولنے کا فیصلہ جہاں جسم فروش خواتین سے بھی دو قدم ...
دنیا کا شرمناک ترین ہوٹل کھولنے کا فیصلہ جہاں جسم فروش خواتین سے بھی دو قدم بڑھ کر ایسی سہولت مہیا کی جائے گی کہ سن کر ہی انسان توبہ پر مجبور ہوجائے

  


ایمسٹرڈیم(مانیٹرنگ ڈیسک) نیدرلینڈ کا دارالحکومت ایمسٹرڈیم قحبہ خانوں کی بہتات کی وجہ سے سے دنیا بھر میں ’گناہ کا شہر‘ کے نام سے مشہور ہے۔ اب اس گناہ کے شہر میں ایک ایسا گناہ شروع ہونے جا رہا ہے جس کا الزام جدید ٹیکنالوجی کے سر جائے گا۔ برطانوی اخبار ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق ایمسٹرڈیم میں انسانی قحبہ خانوں کے بعد اب ’روبوٹس‘ کے قحبہ خانے بھی کھلنے جا رہے ہیں جہاں روبوٹ عیاش مردوخواتین کی جنسی تسکین کے لیے دستیاب ہوں گے۔ان قحبہ خانوں میں مختلف شکلوں اور مختلف ماڈلز کے روبوٹ دستیاب ہوں گے تاکہ عیاش طبع لوگ ہر قحبہ خانے میں نئے تجربے سے حظ اٹھا سکیں۔

جسم فروش خواتین کا شہر، دنیا کا وہ شہر جہاں جسم فروش خواتین کی تعداد دنیامیں سب سے زیادہ ہے، کونسا شہر ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

آسٹریلیا کے ماہر جنسیات مائیکل مارس اور نیوزی لینڈ کی ماہر علم نجوم آئیان یومان نے ایک مشترکہ کتاب لکھی ہے جس میں لوگوں کے مستقبل کے جنسی رجحانات کے متعلق پیش گوئیاں کی گئی ہیں۔ انہوں نے کتاب میں لکھا ہے کہ ”دنیا میں بہت جلد قحبہ خانوں کی نیچر تبدیل ہونے جا رہی ہے۔ ایمسٹرڈیم میں روبوٹس کے قحبہ خانے قائم ہونے کے بعد اس حوالے سے شہرت رکھنے والے ملک بھی اس کی پیروی کریں گے اور اپنے ہاں ایسے قحبہ خانے کھولیں گے۔ ان ممالک میں میکسیکو، فلپائن اور تھائی لینڈ شامل ہیں۔مستقبل میں قحبہ خانوں کی مقبولیت اس قدر بڑھ جائے گی کہ یہ عمومی بات بن کر رہ جائیں گے اور لوگ اسی طرح قحبہ خانے جایا کریں گے جیسے مساج یا فیشل کروانے کے لیے جاتے ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...