دہشتگردی کسی ایک شہر یا صوبے کا نہیں پورے خطے کا مسئلہ بن چکا ،سخت سیکیورٹی انتظامات کو یقینی بنایا جارہا ہے،وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ

دہشتگردی کسی ایک شہر یا صوبے کا نہیں پورے خطے کا مسئلہ بن چکا ،سخت سیکیورٹی ...
دہشتگردی کسی ایک شہر یا صوبے کا نہیں پورے خطے کا مسئلہ بن چکا ،سخت سیکیورٹی انتظامات کو یقینی بنایا جارہا ہے،وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

جام شورو(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ دہشت گردی کسی ایک شہر یا صوبے کا مسئلہ نہیں بلکہ اب یہ پورے خطے کا مسئلہ بن گیا ہے، حالیہ دہشتگردی کی لہرکے پیش نظرسیکیورٹی کے سخت سے سخت انتظامات کو یقینی بنایا جارہا ہے اور اس ضمن میں قانون نافذ کرنے والے اداروں اور پاک فوج کے اعلیٰ حکام کے ساتھ اجلاس کیے گئے ہیں، دہشتگردی سے نمٹنے کے لیے ہم سب کو متحد ہوکراس کا مقابلہ کرنا ہوگا۔

لیاقت یونیورسٹی آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسزجامشورو(لمس)کے 16ویں سالانہ کانووکیشن کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ اگرچہ سہون بم دھماکے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی ہے تاہم دہشتگرد تنظیمیں اس طرح کی کارروائیوں میں ایک دوسرے سے تعاون کرتی ہیں،پیپلزپارٹی دہشت گردی کا زیادہ شکار رہی ہے اور ہم نے اپنی لیڈرشہید محترمہ بینظیر بھٹو کو بھی دہشتگردوں کے ہاتھوں ہی کھویا ہے اور یہی وجہ ہے کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پی پی پی سب سے آگے ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ دہشت گردی سے متعلق جس پر بھی شک ہوگااس سے نہ صرف تحقیقات کی جائیگی بلکہ ملوث ہونے پر اس کے خلاف بلا تفریق کارروائی بھی کی جائیگی اگرچہ اس کا تعلق کسی بھی جماعت سے کیوں نہ ہو؟۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سہون میں درگاہ حضرت لعل شہبازقلندرپربم دھماکے کے واقع میں پیش رفت ہوئی ہے اوریہ کہنا کہ درگاہ میں نصب کیمرے کام نہیں کررہے تھے درست نہیں کیونکہ درگاہ میں نصب کیمرے کام کررہے تھے اورانہی کیمروں کے باعث اس واقع میں پیش رفت ہوئی ہے جبکہ جاں بحق ہونے والوں کے ورثاء اور زخمی ہونے والوں کو ضروری کارروائی کے بعد معاوضہ اداکرنے کی ہدایت کر دی گئی ہے۔

ایک سوال پر انہو ں نے کہا کہ سندھ اور بلوچستان کے بارڈر کے علاقوں میں دہشتگردوں کی نقل و حمل روکنے اوران کے خلاف کارروائی کرنے سے متعلق سندھ اور بلوچستان کی حکومتیں ایک دوسرے سے تعاون کررہی ہیں اور اس ضمن میں روزانہ کی بنیاد پر قریبی رابطہ رکھنے کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ انتظامی عہدوں پرسے ڈاکٹرز کوہٹایاجائے تاکہ وہ ڈاکٹرز کے بنیادی فرائض انجام دیں اورلوگوں کو علاج ومعالج کی سہولت فراہم کریں۔قبل ازیں کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ ڈاکٹرکا پیشہ ایک مقدس پیشہ ہے اورانہوں نے نئے ڈاکٹرز کوکہا کہ وہ اپنی عملی زندگی میں حقیقی معنوں میں لوگوں کی خدمت کریں۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ چند سالوں میں لمس نے بہت اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے اور یہی وجہ ہے کہ لمس کا نام دنیا کے اچھے تعلیمی اداروں میں شمار ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پی پی پی نے ہمیشہ میڈیکل اورصحت کی سہولیات کی فراہمی کے لیے کوششیں کی ہیں اور اس شعبے کو مزید ترقی دینے کے لیے ہم نے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت کئی ہسپتال قائم کیے ہیں تاکہ لوگوں کو زیادہ سے زیادہ صحت کی سہولت فراہم کی جائے اچھاانسان ہی اچھا ڈاکٹر بن سکتا ہے۔

مزید : جامشورو