میلسی میں اے بی سی کیبل لگنے سے وولٹیج کا مسئلہ حل ہوجائیگا، سعید منیس

میلسی میں اے بی سی کیبل لگنے سے وولٹیج کا مسئلہ حل ہوجائیگا، سعید منیس

میلسی (نمائندہ پاکستان، سپیشل رپورٹر) مسلم لیگ (ن) کے ایم این اے سعید احمدخان منیس نے کہا ہے کہ میلسی شہر کی تاریخ میں پہلی بار حلقہ این اے 170میں 84کروڑ سے زائد گرانٹ بجلی کی ترسیلی نظام کو اپ گریڈ کر نے اور بوسیدہ تاروں ،ٹرانسفارمر ز کی تبدیلی پر لگائی گئی ہے ملتان کے بعد پنجاب (بقیہ نمبر57صفحہ7پر )

بھر میں صرف میلسی میں اے بی سی کیبل لگائی گئی ہے جس سے اندرون شہر کی گنجان آباد یوں میں وولٹیج کی کمی کا مسئلہ حل ہو جائے گا اور اس تار کے ذریعے بجلی بھی چوری نہیں کی جا سکے گی ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے میپکو میلسی ڈویژن میں شہر کے لیے 2کروڑ روپے کی اے بی سی کیبل بچھانے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کر تے ہو ئے کیا انہوں نے کہا کہ 10کروڑ روپے کی خطیر گرانٹ سے ایک عدد ایم وی اے ٹرانسفارمر میلسی گرڈ اسٹیشن جبکہ ایک چک 211ڈبلیو بی گرڈاسٹیشن 16کروڑ روپے سے زائد گرانٹ سے 6فیڈز میں ایچ ٹی پر پوزل 4کروڑ 30لاکھ سے ایل ٹی پر پوزل 5کروڑ 70لاکھ سے زائد کی گرانٹ سے ٹرانسفارمر زکی تبدیلی 3کروڑ سے زائد مالیت سے 369دیہاتوں کو بجلی فراہمی اور 22کروڑ ایک لاکھ روپے سے اے بی سی کنڈیکٹر ز فراہم کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان سے حالیہ ملاقات میں واپڈا اور سوئی گیس سکیموں کی مد میں مزید 30کروڑ روپے کی ڈیمانڈ کی ہے گرانٹ ملتے ہی مزید مزید سکیمیں مکمل کریں گے اسی طرح وزیر اعلیٰ پنجاب کی بوریوالہ آمد کے موقع پر میں نے کسانوں کی ترجمانی کی اور مسائل سے آگاہ کیا امید ہے جلد وزیر اعلیٰ ٹبہ سلطانپور میں دانش سکول کا افتتاح کرنے آئیں گے۔قبل ازیں ایکسیئن میپکو انجینئر شاہد نذیر نے سپاس نامہ پیش کرتے ہوئے میپکو میلسی ڈویژن کیلئے خدمات پر ایم این اے کو خراج تحسین پیش کیا تقریب میں یو سی چیئرمین مہر اجمل خان سگو، راؤ محمد اسحاق، شیخ محمد سلیم، وائس چیئرمین بلدیہ مہر عبد الخالق ارائیں ،چیف آفیسر چوہدری محمد ندیم، حافظ غلام اللہ محمدی، ایس ڈی او چوہدری ناصر محمود، چوہدری طاہر شریف، میاں محمد سجاد ارائیں، میاں عمار گل، راؤ محمد اکبر علی، ملک خوشی محمد، حاجی احمد یار اچار والے، راؤ ریاض حسین ضیاء، ملک خالد رسول، شیخ محبوب الہٰی، میاں محسن نذیر ، شیخ حسنین رضا، محمد ارشد مغل، چوہدری جعفر حسین سمیت دیگر معززین موجود تھے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر