جندول کی ہسپتالوں کا برا حال‘ مریضوں کو کوئی سہولت میسر نہیں

جندول کی ہسپتالوں کا برا حال‘ مریضوں کو کوئی سہولت میسر نہیں

جندول(نمائندہ پاکستان)جندول سب ڈویژن کی تمام ہسپتالوں کا برا حال مریضوں کے لئے کوئی سہولیت میسر نہیں ہسپتالوں کی ناقیص صفائی پر جندول ملاکنڈ ڈویژپاکستان راہ حق پارٹی کی صدر مفتی ضیاء الحق ڈی جی سیکٹری ہلتھ خیبرپختونخو ڈی ایچ او شوکت خان سمیت جندول کی سیاستدانوں پر براس پڑی انہونے کہا کہ جندول میں پرانے پاکستان کی وقت سے تین بڑی بڑی ہسپتالز موجود تھا جس میں ہر چیز سرکاری ملتاتھا مگر نیا پاکستان کی دعوے داراوں نے سب کچھ ختم کردیا ہے جندول کی تمام ہسپتالوں میں ایک ایماندار ڈاکٹرز نظر نہیں ارہاہے تمام ڈکٹرز ہسپتالوں میں مریضوں کے لئے نہیں بلکہ اپنے کمیشن کی ادویات فروخت کرنے کیلئے لائی گئی ہے مفتی ضیاء الحق حیدری نے کہا گزشتہ روز تحصیل منڈا کی کٹگری ڈی ہسپتال بیمار پورسی کے غرض سے گیا تو معلوم ہوکہ منڈا ہسپتال کی ناقیص صفائی نے ڈی جی سیکٹری ہلتھ اور ڈی ایچ او شوکت خان کی داورا جندول بے مقصد اور ناکام دورا کیا ہے اہنونے چکرلگا کر جندول کی سیر کرکے وقت اور حکومتی رقم خرچ کرکے چلا گیا ہے انھونے کہا کہ منڈا ہسپتال میں مریض کیلئے صاف بیڈ میسر نہیں تھا ہسپتال میں جگہ جگہ گند کی ڈھیری لگی تھی انہونے مزید کہا کہ جندول کی تمام ہسپتالوں میں حقدار کلاس فور نظر نہیں ارہاہے تمام کلاس فور خانانوں اور نوابوں کی بچے ہے جن کو شرام محسوس ہورہا ہے کلاس فور کے نام اور وردی ٹوپی پر انہونے مزید کہا کہ نیاء پاکستان میں پہلے بار معلوم ہوا کہ انہونے پرانا پاکستان کی ہسپتالوں کے سسٹم تباوبرباد کردیا ہے انہونے کہا کہ کیا ہستالوں کی گائنی وارڈ نرسوں اور خالہ سے چلانا جندول کی عوام کے ساتھ ظلم نہیں ہے کہ ہستالوں کی امرجنسی میں ایک نرس 24 گھنٹی ڈیوٹی سرانجام دینے والا ڈاکٹر یا نرس اخلاقی ہوسکتا ہے انہونے تمام احکام سے مطالبہ کیا ہے کہ جندول کی ہسپتالوں میں ہزاروں کے تعداد میں کلاس فور ملازمین حکومتی خزانوں سے کروڑوں رقم ،تنخوائے وصولی کررہی ہیں مگر کام کا نوعیت نا ہونے کی برابر ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...