دفاع حرمین شرفین کے سلسلے میں ایک عظیم الشان اہل حدیث کانفرنس کا انعقاد

دفاع حرمین شرفین کے سلسلے میں ایک عظیم الشان اہل حدیث کانفرنس کا انعقاد

رستم(نمائندہ پاکستان)مرکزی جمعیت اہل حدیث مردان ڈویژن کے زیر اہتمام عقیدہ ختم نبوت اوردفاع حرمین شرفین کے سلسلے میں ایک عظیم الشان اہل حدیث کانفرنس کا انعقاد گوجر گھڑی میں کیا گیا جس سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے مرکزی امیر پروفیسر سینٹرساجد میر، صوبہ خیبر پختونخوا ہ کے امیر مولانا رح اللہ توحیدی ،نائب امیر مولانا سید عبدالبصیر المدنی ،مولانا فضل ربی ،شوری علماء اہل حدیث امیر شیخ عبدالعزیز ،سینئر نائب امیر مولانا علی محمد ابو تراب اور سعودی عرب سے تشریف لانے والے مہمان خصوصی نوجوان عالم دین شیخ ابو حسان اسحاق سواتی نے اسلام کے بنیادی عقیدے ختم نبوت کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسلام ہی اللہ تعالی کے نزدیک مقبول اور پسند یدہ دین ہے جناب رحمتہ العلمین محمدمصطفی ؐ پر سلسلہ نبوت کا اختتام ہونے کے بعد اب ہماری ذمہ داری بنتی ہے کہ فرقہ روایت اور مسلکی تعصبات سے ہٹ کر خالص اسلام جو کہ قرآن و سنت پر مبنی ہے کی دعوت اور پاکیزہ تعلیمات عام کریں ،اسلام امن اور اخوت کا دین ہے تمام امت مسلمہ کے درمیا ن کلمہ طیبہ کی بنیا د پر عقیدہ توحید کا مقدس رشتہ قائم ہے جس کی روشنی میں کسی بھی رنگ و نسل سے تعلق رکھنے والے تمام مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہیں ۔ مقررین نے حرمین الشرفین کے دفاع کو اپنا ایمانی فریضہ قرار دیا اور حال ہی میں سعودی عرب کی ولی عہد محمدبن سلمان بن عبدالعزیز کے دوراہ کو بہت خوش آئندہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب نے ہر مشکل گھڑی میں مملکت عزیز پاکستان کا بھر پور ساتھ دیا ہے اور مخلصانہ تعاون پیش کیا ہے حکومت کو چاہئے کہ اس مخلصانہ اور برادانہ تعلق کومذید مستحکم کرنے کی طرف سنجیدگی سے عملی اقدامات کرے اجتماع میں بھارتی مذموم مقاصد اور مودی حکومت کے بے بنیادپر و پیگنڈے کی پر زور الفاظ میں مذمت کی گئی اور قائدین نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ملک کے دفاع کیلئے تمام مذہبی اور سیاسی جماعتیں ایک صف میں کھڑی ہیں اور مملکت عزیز پاکستان کی سلامتی کے لئے کسی بھی قربانی سے دریع نہیں کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...