نیشنل ٹیسٹنگ سروس کی 3ارب 30 کروڑ کی ٹیکس چوری پکڑی گئی

نیشنل ٹیسٹنگ سروس کی 3ارب 30 کروڑ کی ٹیکس چوری پکڑی گئی

اسلام آباد (آن لائن)نیشنل ٹیسٹ سروس پاکستان (این ٹی ایس ) بھی ٹیکس چور ادارہ کے طور پر سامنے آگیاہے گزشتہ گیارہ سالوں میں این ٹی ایس حکام نے نہ کوئی ٹیکس اداکیا ہے اور نہ ٹیکس نمبر حاصل کرنے کی زحمت گوارہ کی ہے جبکہ ایف بی آر حکام بھی 15سال تک گہری نیند میں سو ئے رہے ۔ انہوں نے بھی اس اہم ادارہ سے اربوں روپے کی ٹیکس رقم وصول کرنے کی زحمت گوارہ نہیں کی اور نہ نوٹس جاری کیا ہے۔ سرکاری دستاویزات کے مطابق این ٹی ایس ہر سال 8ارب 47کروڑ سے مختلف ملازمتوں کیلئے درخواست دینے والے بے روزگار وں سے ٹیسٹ کے نام پر وصول کرتا تھا ۔ گزشتہ 16سالوں میں این ٹی ایس حکام نے بے روزگار وں سے ٹیسٹ کے نام پر اربون روپ لوٹے ہیں جبکہ قومی خزانے میں ایک پائی بھی جمع نہیں کرائی ہے۔ یہ بے روزگار وں سے این ٹی ایس کے اوسط ایک ہزار روپے وصول کرتی تھی اسطرح انہیں انکم ٹیکس 33فیصد کے حساب سے 2ارب 26کروڑ 58لاکھ جبکہ سلز ٹیکس 16فیصد کے حساب سے 1ارب سے زائد ادا کرتا تھا اور مجموعی طور پر قومی خزانے میں 3ارب 30کروڑ انکم ٹیکس کی مد میں دا کرنا تھا لیکن اس ادارہ کے افسران نے ایک پائی بھی قومی خزانے میں جمع نہیں کرائی جس کی بڑی وجہ ایف بی آر حکام کی ٹیکس وصولی میں عدم دلچسپی بتائی گئی ہے۔

مزید : صفحہ آخر /پشاورصفحہ آخر


loading...