مقبوضہ کشمیر کی سنگین صورتحال ،ایل قلم اور صحافیوں کی ذمہ داریاں بڑھ گئیں:سردار مسعود

مقبوضہ کشمیر کی سنگین صورتحال ،ایل قلم اور صحافیوں کی ذمہ داریاں بڑھ ...

مظفرآباد(این این اائی)آزادجموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی موجودہ سنگین صورتحال میں اہل قلم اورصحافیوں کی ذمہ داریوں میں اضافہ ہوگیا ہے کہ وہ بھارتی مظالم بے نقاب کرنے کے ساتھ عالمی حمایت حاصل کرنے کے لیے قلمی محاذ پر جدوجہد جاری رکھیں۔صدر آزادکشمیر نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ جموں وکشمیر میں اپنے جرائم پر پردہ ڈالنے کے لیے سانحہ پلوامہ کا ارتکاب کیا۔بھارت کے اپنے جرائم کی حقیقت دنیا کے سامنے کھل کر آگئی ہے یہی وجہ ہے کہ بھارت کے موقف کو عالمی برادری نے مسترد کردیا ہے اور مسئلہ کشمیر کی گونج دنیا بھر میں سنائی دے رہی ہے۔مقبوضہ کشمیر کے عوام 70برس سے حق خود ارادیت کے حصول کے لیے قربانیاں دے رہے ہیں۔کشمیری طاقت کے سامنے نہ جھکے ہیں نہ جھکنے والے ہیں سیاسی وسفارتی ذرائع سے مسئلہ کشمیر کا حل ممکن ہے ۔پاکستان کی سیاسی وعسکری قیادت نے بھارتی دھمکیوں پر جو موقف پیش کیا ہے وہ ساری قوم کے جذبات کی ترجمانی ہے۔پاکستان وآزادکشمیر کوئی ترنوالہ نہیں پہل کرنے والے بھارت کو اپنی صبح وشام بھول جائے گی۔بھارت آزادکشمیر کو بھی میلی آنکھ سے دیکھنے کی جرات نہ کرے یہ خطہ یہاں کے بہادر عوام نے لڑ کو خود آزاد کروایا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مظفرآباد پریس کلب کے صدر سلیم پروانہ کی قیادت میں ملنے والے عہدیداران وممبران مجلس عاملہ کے وفد سے ایوان صدر میں بات چیت کرتے ہوئے کیا۔سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کے مابین پہلے بھی 3جنگیں ہوچکی ہیں۔مسئلہ کشمیر کا حل فوجی تصادم وعسکری ذرائع سے نہیں نکل سکتا اس کے لیے مذاکرات ،سیاسی وسفارتی ذرائع کو بروئے کار لانا ہوگا۔بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں 7لاکھ افواج تعینات کر کے جبراً قبضہ کررکھا ہے وہ مذاکرات پر آمادہ نہیں ہوتا ہے ۔صحافیوں کے مختلف سوالات کے جواب دیتے ہوئے صدرریاست نے کہا کہ ہندوستان کی حکومت اور انتہا پسند تنظیمیں وگروپ ہندوستان میں نفرت کی آگ بھڑکا رہے ہیں ہندوستان اس آگ کی لپیٹ میں خود آئے گا ۔پورے ہندوستان میں مسلمان اور دیگر اقوام کو کا روبار،تعلیم حاصل کرنے اور رہائش کی سہولت سے محروم کی جارہے ہیں۔بھارت علاقہ وعالمی امن کو تباہ کرنے کی پالسی پر گامزن ہے۔امید ہے کہ بھارت سرجیکل سٹرائیک سے گریز کرے گا ورنہ اس کو جو جواب ملے گا اس کا اظہار حکومت پاکستان اور عسکری ترجمان نے کردیا ہے۔صدر نے مظفرآباد پریس کلب کی کارکردگی کی تعریف کی۔سلیم پروانہ نے صدرریاست کو مظفرآباد پریس کلب کی شاندار کارکردگی اور خدمات سے آگاہ کیا اور کہا کہ ادارہ 25برس سے خدمات سرانجام دے رہا ہے اور کسی ادارہ کا متوازی نہیں ہے۔تمام پریس کلبوں کا دائرہ کار ضلع یا تحصیل تک محدود ہوتا ہے ۔انہوں نے صدر گرامی کو پریس فاؤنڈیشن کے بانی بورڈ آف گورنر کا نوٹیفکیشن بھی ملاحظہ کروایا۔وفد میں میر بشارت،آغا سفیر کاظمی،حاجی لطیف اعوان،گلشاد احمد بٹ،جاوید میر،عارفہ محمود،راجہ شہزاد خان،راجہ ظفر خان،صفید عباسی،نعیم خان،خواجہ رشید،ایل بی فاروقی ودیگر شامل تھے۔صدر مظفرآباد پریس کلب سلیم پروانہ نے کہا کہ ذمہ دارانہ صحافت کے فروغ کا سلسلہ جاری رہے گا امید ہے کہ حکومت امتیازی رویے وسلوک کی پالیسی پر نظر ثانی کرے گی۔

سردار مسعود

مزید : صفحہ آخر /پشاورصفحہ آخر


loading...