استعمال شدہ پانی کو صاف کرنے کا منصوبہ ،2کروڑ 13لاکھ لاگت آئیگی

استعمال شدہ پانی کو صاف کرنے کا منصوبہ ،2کروڑ 13لاکھ لاگت آئیگی

لاہور( سٹی رپورٹر )صوبائی وزیر اوقاف سید سعید الحسن نے کہا ہے کہپانی کا ضیاع ہر حال میں روکنا وقت کی اہم ضرورت ہے ،موجودہ حکومت واٹر ٹریٹمنٹ کے منصوبوں پر کار بند عمل ہے ،محکمہ اوقاف 2کروڑ 13 لاکھ روپے کی خطیر رقم سے استعمال شدہ پانی کو قابل استعمال بنانے کیلئے ٹینکوں کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ جلد صوبہ بھر میں مساجد میں وضو کے لئے استعمال شدہ استعمال شدہ پانی کو دوبارہ قابل استعمال بنانے کے لئے اقدامات عمل میں لائے جا رہے ہیں۔اس ذخیرہ شدہ پانی کو پودوں کو دینے و دیگر سڑکوں کو دھونے کے استعمال میں لایا جائے گا۔ پہلے فیز میں داتا دربار جبکہ دوسرے فیز میں شاہ حسین ،میاں میر اور بہاؤالحق کے د درباروں پر استعمال شدہ پانی کو ذخیرہ کرنے کے بڑے بڑے ٹینک بنائے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے لئے ماضی کے برعکس شفاف ڈیل اور بہترین ورکنگ کو یقینی بنائے گی اس سلسلہ میں عالمی معیار کے مطابق واٹر ٹریٹمنٹ کے جدید پلانٹس لگائے جائیں گے جن کے ذریعے دریاؤں اور نہروں کے پانی کو بھی روزمرہ کے استعمال میں لایا جا سکے گا، پہلے مرحلے میں پنجاب کے بڑے شہروں لاہور،ملتان ،راولپنڈی ،فیصل آباد،گوجرانوالہ اور سرگودھا کے اضلاع میں واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹس لگائے جائیں گے جن کے لئے مختلف غیر ملکی کمپنیوں سے پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت معاہدے کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ صوبے بھر میں پانی کے شعبے میں بھاری سرمایہ کاری اور کام کرنے کے وسیع مواقع موجود ہیں جن کیلئے عملی کام کا آغاز کر دیا گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ماضی کی حکومت نے پانی کی حفاظت کیلئے بھی کچھ نہیں کیا بلکہ الٹا صاف پانی کمپنی کے نام پر اربوں روپے سرکاری خزانے سے خردبرد کیے گئے جن کی تفصیلات عوام کے سامنے آ چکی ہیں ، وزیر اعلیٰ پنجاب اور وزیر اعظم عمران خان کی ہدایات کے روشنی میں صاف پانی کی فراہمی کیلئے اقدامات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1 /پشاورصفحہ آخر


loading...