ہاکی کی ترقی میں تعلیمی ادارے اہم کردار ادا کر سکتے ہیں:رمضان جمالی

ہاکی کی ترقی میں تعلیمی ادارے اہم کردار ادا کر سکتے ہیں:رمضان جمالی

اسلام آباد(اے پی پی) سندھ ہاکی ایسوسی ایشن کے سیکرٹری جنرل اور ٹورنامنٹ ڈائریکٹر محمد رمضان جمالی نے کہا ہے کہ ملک میں قومی کھیل ہاکی کی ترقی میں تعلیمی ادارے بڑا اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بین الصوبائی انڈر۔19 ہاکی چیمپئن شپ میں نیا ٹیلنٹ سامنے آنے کی توقع ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہاکی فیڈریشن نے محمد سعید خان کی سربراہی میں سلیکشن کمیٹی تشکیل دی ہے جس کے ممبران میں راولپنڈی سے پرویز اسلم کیانی ، پی آئی اے سے احسان اللہ، پاکستان واپڈا سے ذاکر اللہ شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چیمپئن شپ میں اچھی کارکردگی دکھانے والے کھلاڑیوں کی فہرست تیار کرکے کمیٹی پاکستان ہاکی فیڈریشن کو فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ابھی تک کسی بھی ٹیم کے خلاف کوئی واک اوورز نہیں ہوا بلکہ چیمپئن شپ کے انعقاد سے راولپنڈی اور اسلام آباد کے نوجوان کھلاڑیوں کو دیکھنے اور سیکھنے کا موقع ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیمپئن شپ میں کافی نیا ٹیلنٹ سامنے آ رہا ہے اور اگر اس ٹیلنٹ کو پالش کیا جائے تو یہ کھلاڑی آگے چل کر قومی ٹیم میں اپنی جگہ بنا سکتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں محمد رمضان جمالی نے کہا کہ پاکستان ہاکی فیڈریشن چیمپئن شپ کے دوران تمام کھلاڑیوں کو سہولیات فراہم کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں ہاکی کے ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے اور ملک میں قومی کھیل ہاکی کی ترقی میں تعلیمی ادارے بڑا اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔ حکومت کو پاکستان ہاکی فیڈریشن کے ساتھ تعاون کرنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان خود بھی ایک کھلاڑی رہ چکے ہیں اور کھلاڑیوں کے مسائل کو جاتنے ہیں۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے ہاں سب سے زیادہ مسئلہ کھلاڑیوں کی بے روز گاری کا ہے۔ پاکستان ہاکی فیڈریشن نے کئی اداروں میں کھلاڑیوں ملازمتیں دلائی ہے لیکن پھر بھی کافی اچھے کھلاڑی بے روز گار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت بین الصوبائی ہاکی چیمپئن شپ شہناز شیخ ہاکی سٹیڈیم راولپنڈی میں جاری ہے جس میں ملک بھر سے چودہ ٹیمیں حصہ لے رہی ہیں جن کو چار گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے، گروپ اے میں پنجاب (اے)، سندھ ( بی) اور گلگت بلتستان، گروپ بی میں پنجاب( بی)، گلگت بلتستان (بی) اور بلوچستان،گروپ سی میں سندھ ( اے)، خیبر پختونخوا( بی) ، فاٹا اور پنجاب( ڈی) جبکہ گروپ ڈی میں خیبر پختونخوا (اے)، اسلام آباد، پنجاب (سی) اور آزاد جموں وکشمیر شامل ہیں۔ چیمپئن شپ کے سیمی فائنل (کل) ہفتہ کو جبکہ فائنل میچ 24 فروری کو کھیلا جائے گا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی /پشاورصفحہ آخر


loading...