زہر خورانی سے بچوں کی اموات حکومت کی نا اہلی کا ثبوت ہے :حافظ نعیم الرحمٰن

زہر خورانی سے بچوں کی اموات حکومت کی نا اہلی کا ثبوت ہے :حافظ نعیم الرحمٰن

کراچی (اسٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ پانچ بچوں اور ایک خاتون کی زہریلاکھانا کھانے سے ہلاکت سندھ حکومت کی اداروں میں نااہلی اور کرپشن کا پردہ اٹھانے کے لیے کافی ہے ، انہوں نے کہاکہ اس سے قبل بھی زہریلا کھانا کھانے سے اموات واقع ہوئی تھیں ، زہریلی شراب پینے سے سینکڑوں افراد ہلاک ہوچکے ہیں یہ واقعات ظاہر کرتے ہیں کہ سندھ میں حکومت کا نظام مکمل کرپشن اور نااہلی پر مبنی ہے ،کوئی ادارہ اپنا کام نہیں کررہا ، ہر محکمے کے اہلکار لوگوں کو بلیک میل کر کے رشوت وصول کررہے ہیں اور اس کے عوض پیسے کے بھوکے افرا دکو موت بیچنے کی اجازت دے رہے ہیں ۔انہو ں نے کہاکہ فوڈ اور ہیلتھ انسپکٹرز اس قدر بے رحم اور ظالم بن چکے ہیں کہ ان کے نزدیک لوگوں کی ہلاکت معمولی بات ہے ، بس ان کو رشوت ملتی رہے اوریہ سب اسی وقت ممکن ہے جب انہیں اوپر والوں کی آشیر باد حاصل ہوتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ چیف جسٹس کے چھاپے میں نکلنے والی شراب شہد میں تبدیل ہوجائے تو ایسی صوبائی حکومت کی کارکردگی پر کچھ اور کہنے کی ضرورت نہیں ہے ،حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ یہ امر بھی قابل ذکرہے کہ عدلیہ صرف اپنی پسند کے ایشوز میں فعال ہے اورنظام کی درستگی کے لیے کسی توجہ نہیں ، اگر اس طرح کے واقعات کے ذمے دارافسران کو قرارواقعی سزا ملنی شروع ہوجائے تو گندی اور ناقص غذائی اشیاء فروخت ہونا ختم ہوسکتی ہیں ۔لیکن حال یہ ہے کہ شہر میں دوائیاں تک ملاوٹ شدہ اور دونمبر مل رہی ہیں ایسے میں عوام کو خود اپنے حقوق کے لیے نکلنا ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی حکومت سندھ سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ عوام پر رحم کرے اور سیاسی شعبدہ بازیوں اور کرپشن سے کچھ وقت بچا کر ان مسائل کو حل کرنے کے لیے اقدامات کرے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر /راولپنڈی صفحہ آخر


loading...