موبائل فونز ڈی کوڈ کرنیوالوں کیخلاف کریک ڈاؤن کیا جائے :آئی جی سندھ

موبائل فونز ڈی کوڈ کرنیوالوں کیخلاف کریک ڈاؤن کیا جائے :آئی جی سندھ

کراچی(کرائم رپورٹر )آئی جی سندھ ڈاکٹرسید کلیم امام نے ڈی آئی جی سی آئی اے دفتر کا خصوصی دورہ کیا اور جملہ محکمانہ امور کا جائزہ لیتے ہوئے مذید ضروری ہدایات دیں۔ڈی آئی جی سی آئی اے عارف حنیف کے علاوہ اے وی سی سی،اے سی ایل سی اور ایس آئی یو کے ایس ایس پیز بھی اس موقع پر موجود تھے ۔آئی جی سندھ نے ڈی آئی جی سی آئی اے کے لیئے دس لاکھ جبکہ اے وی سی سی،اے سی ایل سی اور ایس آئی یو کے ایس ایس پیز کے لیئے پانچ پانچ لاکھ انعام کا اعلان کرتے ہوئے ہدایات دیں کہ تفویض کردہ ذمہ داریوں کو انتہائی مہارت اور تجربوں کو پیش نظر رکھ مزید مؤثر اور نتیجہ خیزبنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ مختلف سرکاری اور نجی بینکوں کے نمائندگان کے ساتھ شیڈول اجلاس ترتیب دیکر انہیں بینکس سیکیورٹی مینؤل پر اسکی روح کے مطابق عمل درآمد اور بینکوں کے اندر اور باہر باالخصوص اے ٹی ایم کے اندرسی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب اور انہیں درست حالت میں رکھنے کی اہمیت اور افادیت سے آگاہی دی جائے جبکہ دوران اجلاس پولیس کے موجودہ ایس او پی اور اسکی ترجیحات کے بارے میں بھی بتایا جائے ۔آئی جی سندھ نے ہدایات دیں کہ گمشدہ/لاپتہ بچوں کی تلاش جیسے اقدامات میں ماڈرن تیکنیکس کے تحت انتہائی سنجیدہ کاوشوں کو ناصرف یقینی بنایا جائے بلکہ اس حوالے سے روزانہ کی بنیاد پراٹھائے گئے جملہ اقدامات پر مشتمل رپورٹ بھی برائے ملاحظہ ارسال کی۔انہوں نے مختلف علاقوں سے چھینی گئی سرکاری گاڑیوں کی برآمدگی اور ملوث ملزمان کی گرفتاری کے حوالے سے ہدایات دیں اور کہا کہ چوری/چھینی گئی گاڑیوں/موٹرسائیکلوں کے پارٹس کی خرید وفروخت میں ملوث عناصر اور ایسی مارکیٹوں کی باقاعدہ نشاندہی کرکے بھرپور اور منظم کریک ڈاؤن کو یقینی بنایا جائے ۔انہوں نے مذید کہا کہ موبائل فون مارکیٹ ایسوسی ایشن کے نمائندگان سے شیڈول اجلاس کرکے چوری اور چھینے گئے موبائلزفون کی خریدوفروخت اور باالخصوص ایسے موبائلز کے آئی ایم ای آئی نمبرز کی ٹیمپرنگ اور انہیں ڈی کوڈ کرنیوالے عناصر/ دکانداروں کیخلاف انتہائی سخت اقدامات اٹھائے جائیں۔آئی جی سندھ نے سی آئی اے کو خصوصی ٹاسک دیتے ہوئے کہا کہ منشیات کی خرید وفروخت میں ملوث مرکزی ملزمان سمیت انکے گروہوں سرپرستوں اور سہولت کاروں کیخلاف بلاکسی دباؤ انتہائی ٹھوس اور غیرجانبدارانہ اقدامات کو یقینی بنایا جائے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر /راولپنڈی صفحہ آخر


loading...