بجلی کے ناجائز استعمال کے خلاف مہم ، 3ماہ میں 43کروڑ روپے کی ریکارڈ ریکوری

بجلی کے ناجائز استعمال کے خلاف مہم ، 3ماہ میں 43کروڑ روپے کی ریکارڈ ریکوری

پشاور (سٹاف رپورٹر) وزیراعظم کی ہدایات کی روشنی میں خیبرپختونخوامیں بجلی کے غیرقانونی استعمال کی روک تھام اور بقایا جات کی ریکوری کے لیے قائم صوبائی انرجی ٹاسک فورس سیل نے گزشتہ 3 ماہ سے جاری آپریشن کے دوران بجلی نادہندگان سے اب تک 43 کروڑ روپے کی ریکارڈ وصولی کرکے قومی خزانہ میں جمع کرا دیئے ہیں جبکہ بجلی کے غیرقانونی استعمال میں زیر استعمال 30 کروڑروپے کے آلات بھی قبضے میں لے لئے گئے۔ اسی طرح کار سرکار میں مداخلت کرنے پر 400 افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ خیبرپختونخوا حکومت کی جانب سے محکمہ توانائی و برقیات میں قائم انرجی ٹاسک فورس کے رپورٹنگ سیل کے انچارج سیف اللہ خان ،چیف کو آرڈینیٹر ملک شجاع خان اوررپورٹنگ آفیسرطارق خان کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق صوبے بھر میں بجلی کے غیرقانونی استعمال کے خلاف اور اربوں روپے کی ریکوری کے لئے صوبائی حکومت کے جاری آپریشن کے دوران اب تک 3ماہ کے دوران 43 کروڑ روپے کی ریکارڈ ریکوری کی گئی ہے انہوں نے کہا کہ چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا سلیم خان اور ایڈیشنل سیکرٹریز محکمہ توانائی محمد آصف اور ظفرالاسلام کی گائیڈ لائن کے مطابق ضلع پشاور، خیبر، مردان، نوشہرہ، بنوں ،چارسدہ، لکی مروت اور صوابی میں پیسکو اورمتعلقہ ضلعی انتظامیہ کی آپریشنل ٹیموں نے بجلی کے غیرقانونی استعمال کے ساڑھے چودہ ہزارکنڈے ہٹاکر کئی علاقوں کے ٹرانسفارمر ،تاریں،کنڈے اور دیگر آلات قبضہ میں کرلئے۔ اسی طرح نادہندگان کے خلاف 1500 مقدمات بھی درج کر لیے گئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان جو صوبائی انرجی ٹاسک فورس کے انچارج بھی ہیں، نے بھی آپریشنل کارروائی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے اسے مزید تیز کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...