’یہ کام کرنے ہیں تو اسرائیل کے ساتھ تعلقات بہتر بنانا ہوں گے‘ پرویز مشرف نے انتہائی حیران کن بات کہہ دی

’یہ کام کرنے ہیں تو اسرائیل کے ساتھ تعلقات بہتر بنانا ہوں گے‘ پرویز مشرف نے ...
’یہ کام کرنے ہیں تو اسرائیل کے ساتھ تعلقات بہتر بنانا ہوں گے‘ پرویز مشرف نے انتہائی حیران کن بات کہہ دی

  


دبئی(مانیٹرنگ ڈیسک) سابق صدر پرویز مشرف نے اپنے دورِ حکومت میں بھی اسرائیل کے ساتھ تعلقات بحالی کے معاملے پر کام کیاا ور اب ایک بار پھر انہوں نے اس حوالے سے انتہائی حیران کن بات کہہ دی ہے۔ دی نیوز کے مطابق دبئی میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پرویز مشرف نے کہا کہ ”ہمیں بھارتی پراپیگنڈے کا سدباب کرنے کے لیے اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنا ہوں گے۔“ اس موقع پر انہوں نے اس حوالے سے ہونے والی کوششوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ”میں نے 2005ءمیں ترکی کی مدد سے اسرائیلی قیادت کے ساتھ رابطہ قائم کرنے کی کوشش کی اور انہیں ملاقات کی پیشکش کی۔ اسرائیلی لیڈرشپ نے 24گھنٹے کے اندر میری اس پیشکش کا جواب دیا۔ چنانچہ میرا خیال ہے کہ اسرائیل پاکستان کے ساتھ بہتر تعلقات قائم کرنا چاہتا ہے۔“

پلوامہ حملے کے بعد بھارت کی طرف سے انتقام لینے کی دھمکیوں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے پرویز مشرف نے کہا کہ ”بھارت لائن آف کنٹرول پر پاکستان میں سرجیکل سٹرائیک حملے کر سکتا ہے کیونکہ اسے کئی مقامات پر ہم پر برتری حاصل ہے۔ تاہم پاکستان کو ایسی کسی بھی سٹرائیک کے لیے تیار رہنا چاہیے اور اس کے انسداد کی پیشگی منصوبہ بندی کر لینی چاہیے۔اگر بھارت پاکستان پر کوئی سرجیکل سٹرائیک کرتا ہے تو اسے اپنے دیگر بارڈر سے مزید فوج کشمیر میں لانے کی ضرورت ہو گی۔“پاکستان اور بھارت کے مابین ایٹمی جنگ کے امکان پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ”ایٹمی جنگ سے ہر ممکن گریز کرنا چاہیے تاہم اگر ہم انڈیا پر ایک ایٹم بم گراتے ہیں تو وہ پاکستان پر 20بم گرا سکتا ہے اور پورے ملک کو تباہ کر سکتا ہے۔ ہمیں پورے بھارت کو تباہ کرنے کے لیے اس پر 50ایٹم بم پھینکنے ہوں گے۔ “

مزید : عرب دنیا


loading...