سوشل میڈیا ریگولیشن سے متعلق دائر دو مختلف درخواستوں کی سماعت

سوشل میڈیا ریگولیشن سے متعلق دائر دو مختلف درخواستوں کی سماعت

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے سوشل میڈیا رولز کو غیر آئینی قراردلوانے کی درخواست کے قابل سماعت ہونے کی بابت مزید دلائل طلب کرلئے جبکہ سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کا حکم جاری کرنے کی درخواست پر وزارت داخلہ سے جواب طلب کرلیا۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے سوشل میڈیا رولز 2020ء کو کالعدم قراردلوانے اور سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کے لئے دائر دو الگ الگ درخواستوں کی سماعت کی،فاضل جج نے نئے سوشل میڈیا رولز کے خلاف درخواست کے قابل سماعت ہونے کے معامل پردرخواست گزار شہری جنت علی کی درخواست پر مزید دلائل طلب کرلئے، فاضل جج نے درخواست گزار سے استفسار کیا کہ سوشل میڈیا رولز کے نفاذ سے آپ کا کون ساحق متاثر ہوا ہے؟مفروضوں پر بات نہ کریں،درخواست گزار کا موقف ہے کہ اظہار رائے کی آزادی ہر شہری کا بنیادی حق ہے، حکومت رولز کے ذریعے عوام کے بنیادی حقوق پر پابندی نہیں لگا سکتی، نئے سوشل میڈیا رولز آئین سے متصادم ہیں۔

سوشل میڈیا

مزید : صفحہ آخر