معیشت کا پہیہ چل رہاہو تو ریاست چل سکتی ہے،مرتضیٰ وہاب

معیشت کا پہیہ چل رہاہو تو ریاست چل سکتی ہے،مرتضیٰ وہاب

  



کراچی(سٹاف رپورٹر)حکومت سندھ کے ترجمان اور وزیر اعلی سندھ کے مشیر قانون بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ معیشت کا پہیہ چل رہاہو تو ریاست چل سکتی ہے، موجودہ حکومت کی غیر واضح معاشی پالیسی کا خمیازہ ملک کے22 کروڑ عوام کو بھگتنا پڑرہا ہے،غلط معاشی پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی میں ریکارڈ اضافہ ہوا جس سے عوام سخت پریشان ہیں۔پیر کو سندھ اسمبلی کے کمیٹی روم میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس وقت صورتحال یہ ہے کہ کوئی فرد اورکوئی شعبہ ایسا نہیں جو موجودہ حکومت کی معاشی پالیسیوں سے متاثر نہ ہوا ہو۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے برسراقتدار آنے سے قبل کہا تھا کہ حکومت ملی تو عوامی مسائل حل کردوں گا،کل خان صاحب نے جنگل کے ذریعے روزگار دینے کا حیران کن اعلان کیاہے۔انہوں نے کہا کہ شاید عمران خان آج بھی خود کو اپوزیشن لیڈر سمجھتے ہیں گزشتہ18ماہ میں گورننس نام کی کوئی چیز نظر نہیں آتی،پاکستان کے گردشی قرضے ایک اعشاریہ 9ٹریلین تک پہنچ گئے،خان صاحب کے دور اقتدار میں گردشی قرضے میں 725ارب روپے کا اضافہ ہواہے۔حکومت کی غلط اقتصادی پالیسیوں پر ہر شخص سراپااحتجاج ہے۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے عوام کو گیس لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے۔مرتضی وہاب نے سوال کی کہ کیا خان صاحب کی پالیسی عوام کی چیخیں نکالناتھی؟اگر وعدوں کو وفا نہیں کرسکتے تو خان صاحب بات نہ کریں۔انہوں نے کہا کہ یوٹرن اور عوامی مشکلات میں اضافے پرخان صاحب قوم سے معافی مانگیں۔مشیر قاون نے کہا کہ بلاول بھٹو جب عوام کے مسائل پر بات کرتے ہیں تو حکومتی صفوں میں کھلبلی مچ جاتی ہے،موجودہ حکومت کو بلاول بھٹو فوبیا ہوگیاہے،بلاول بھٹو لاہور پہنچے تو پی ٹی آئی کو پریشانی لاحق ہوگئی۔ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی وزرا عجیب باتیں کرتے ہیں پ اور وفاقی وزرا اپنی حکومت کی کارکردگی بتانے سے قاصرہیں۔انہوں نے کہا کہ ہماری سیاسی تربیت الزامات کی اجازت نہیں دیتی،پی ٹی آئی والے وزیراعظم سے پوچھیں کہ ایسا آئی جی سندھ میں ہے جو کام نہیں کرتا۔مرتضی وہاب نے کہاکہ وزیراعظم خود اس آئی جی کے تبادلے کا کہہ چکے ہیں،پی ٹی آئی کو اشتعال انگیزی پر شرم آنی چاہیے۔انہوں نے کہاکہ خان صاحب کی حکومت زیادہ ٹک نہیں پائیگی۔مشیر قانون نے کہا کہ کلیم امام سندھ حکومت کے آئی جی ہیں پی ٹی آئی کے نہیں،تحریک انصاف اپنے سیاسی مقاصد کے لئے کلیم امام کو استعمال کررہی ہے۔انہوں نے اپنے اس یقین کا بھی اظہار کیا کہ عمرکوٹ ضمنی الیکشن میں سیاسی مخالفین کو ہمیشہ کی طرح شکست ہوگی،تحریک انصاف اور اسکے اکابرین آئی جی کو استعمال کررہے ہیں،افسوس ہے کہ کلیم امام سیاسی معاملات میں استعمال ہورہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کاش باقی دیگر ایشوز پر کلیم امام پر کوئی اقدامات کررہے ہوتے۔مرتضی وہاب نے کہا کہ سندھ واحد صوبہ ہے جہاں پولیس خودمختار ہے حکومت کا اختیارنہیں،سندھ میں حکومت کو پولیس کے معاملات دیکھنے سے روک دیاگیاہے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب،کے پی حکومت کی درخواست پر آئی جی تبدیل ہوجاتاہے۔وزیراعظم سے مطالبہ کرتاہوں کہ سندھ کے آئی جی کو تبدیل کریں۔

مزید : صفحہ اول