دنیا کی واحد خاتون جو پیشاب کرتی ہے تو شراب نکلتی ہے

دنیا کی واحد خاتون جو پیشاب کرتی ہے تو شراب نکلتی ہے
دنیا کی واحد خاتون جو پیشاب کرتی ہے تو شراب نکلتی ہے

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں ایک ایسی خاتون منظرعام پر آئی ہے جوایسے حیران کن عارضے میں مبتلا ہے کہ جب پیشاب کرتی ہے تو اس کے جسم سے پیشاب کی بجائے شراب نکلتی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق اس 61سالہ خاتون کا تعلق امریکی ریاست پنسلوانیا کے شہر پٹس برگ سے ہے جس کی شناخت نہیں بتائی گئی۔ یہ خاتون شراب نوشی کی لت میں مبتلا تھی لیکن دو سال سے شراب نوشی ترک کر چکی تھی اور اسی کے علاج کے لیے اس کا جگر ٹرانسپلانٹ ہونا تھا کیونکہ وہ شراب نوشی ک وجہ سے سیروسس (Cirrhosis)نامی بیماری میں مبتلا ہو گئی تھی۔

جب جگر ٹرانسپلانٹ کے لیے یونیورسٹی آف پٹس برگ میڈیکل سنٹر کے ڈاکٹروں نے اس کے پیشاب وغیرہ کے ٹیسٹ کیے تو حیران کن انکشاف ہوا کہ اس کے پیشاب میں شراب کی ملاوٹ تھی، اس پر ڈاکٹروں نے سمجھا کہ خاتون جھوٹ بول رہی ہے۔ وہ اب بھی شراب پیتی ہے اور کہتی ہے کہ وہ شراب چھوڑ چکی ہے۔ اس پر خاتون نے سختی سے تردید کر دی اور ڈاکٹروں کو بتایا کہ اب وہ شراب نہیں پیتی۔ اس پر ڈاکٹروں نے اس کا مکمل چیک اپ کیا جس میں معلوم ہوا کہ یہ خاتون ایک بیماری میں مبتلا ہے جس کا نام ’بلیڈر فرمینٹیشن سنڈروم‘ (Bladder fermentation syndrome)ہے اور اس بیماری کی وجہ سے اس کے پیشاب میں الکوحل آ رہی ہے۔ واضح رہے کہ اسی نوعیت کا ایک واقعہ امریکہ میں ہی 2014ءمیں بھی سامنے آ چکا ہے۔ یہ 46سالہ آدمی تھا جسے پولیس نے شراب پی کر ڈرائیونگ کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا تھا لیکن وہ شخص بضد رہا کہ اس نے شراب پی ہی نہیں۔ اس پر اسے کے ٹیسٹ کروائے گئے تو وہ بھی اسی بیماری کا شکار نکلا تھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس