بھارت میں این پی آر کا ڈر، 100 مسلمانوں نے بینکوں سے اپنا سارا پیسہ نکال لیا

بھارت میں این پی آر کا ڈر، 100 مسلمانوں نے بینکوں سے اپنا سارا پیسہ نکال لیا
بھارت میں این پی آر کا ڈر، 100 مسلمانوں نے بینکوں سے اپنا سارا پیسہ نکال لیا

  



چنئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) مودی سرکار کی مسلم کش پالیسیوں کے خوف کے باعث بھارتی ریاست تامل ناڈو کے ایک گاﺅں کے 100 سے زائد لوگوں نے بینک سے اپنا سارا پیسہ نکال لیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ضلع ناگ پٹنم کے گاﺅں کے لوگوں نے نیشنل پاپولیشن رجسٹر (این پی آر) کے خوف کی وجہ سے بینک سے اپنا سارا پیسہ نکال لیا ہے۔ تھیریجھاندر گاﺅں کے لوگوں نے انڈین اوور سیز بینک میں اپنی جمع پونجی جمع کرا رکھی تھی لیکن انہوں نے شہریت کھونے کے ڈر سے اپنی جمع پونجی نکال لی ہے۔

سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ انڈین اوورسیز بینک کے حکام گاﺅں کے لوگوں کے ترلے کر رہے ہیں اور انہیں یقین دہانیاں کر ا رہے ہیں کہ وہ بینک سے اپنا پیسہ نہ نکالیں ۔

انڈین اوورسیز بینک کے منیجر اور عملے نے گاﺅں کے سکول میں لوگوں کے ساتھ میٹنگ کی اور انہیں یقین دلایا کہ نیشنل پاپولیشن رجسٹر کے عمل کے دوران دستاویزات دینا ضروری نہیں ہوگا اس لیے لوگوں کو ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، ان کا پیسہ بینک میں محفوظ ہے۔

دوسری جانب گاﺅں کے سربراہ نے بینک عملے کی باتوں پر یقین کرنے سے انکار کردیااور واضح کیا کہ گاﺅں کے لوگ اپنی ساری زندگی کی جمع پونجی کھونا نہیں چاہتے ، ابھی تک یہ واضح نہیں ہوا کہ شہریت ثابت کرنے کیلئے کون کون سے کاغذات لگانے پڑیں گے اس لیے اپنا پیسہ بینک سے نکالنے کا فیصلہ کیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی