رحیم یار خان: غیر قانونی کمپنی کروڑوں روپے سمیٹ کر غائب‘ متاثرین دربدر 

رحیم یار خان: غیر قانونی کمپنی کروڑوں روپے سمیٹ کر غائب‘ متاثرین دربدر 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


رحیم یارخان (بیورو رپورٹ) منافع کا لالچ دیکر عوام کو لوٹ لیا گیا غیر قانونی مالیاتی کمپنی نے مختلف منافع بخش سکیموں کا لالچ دے کر لوگوں سے کروڑوں روپے ہڑپ کر لیے‘تفصیلات کے مطابق عباسیہ بنگلوز میں قائم پیراڈائز پرائیویٹ لمیٹڈ کے نام سے قائم غیر قانونی مالیاتی کمپنی نے ضلع بھر سے سادہ لوح لوگوں کو کم شرح سود پر گاڑیوں کی خریداری گھروں اور پلاٹس(بقیہ نمبر25صفحہ 6پر)
 پر قرض اور لاکھوں روپے نقد کیش پر ماہانہ کثیر منافع کا لالچ دیکر کروڑوں روپے لوٹ لیے۔میڈیا نے کمپنی کے بارے جب معلومات کے حصول کے لیے اپنا دائرہ وسیع کیا تو متذکرہ غیر قانونی مالیاتی کمپنی نے فورا نام تبدیل کرلیا‘ اسی دوران میڈیا نے جب اصل حقائق جاننے کے لیے کمپنی کے برانچ منیجر ہارون سانگی اور سیل منیجر نائیلہ مشتاق سے گفتگو کی تو دونوں نے ٹال مٹول سے کام لیا جبکہ کمپنی کے دیگر سہولت کاروں جن کو کمپنی اپنا سٹاف بتا رہی تھی کوئی بھی تسلی بخش جواب نہ دے سکے۔ سہولت کاروں میں محمد زاہدعلی رضاعلی چیمہمرزافرحانعلی قادر مدیحہ شاہثمن زاہرہفرح ریاض شہر کے مختلف علاقوں اور گردونواح کے دیہاتی علاقوں میں ٹیم کی صورت میں جاتے اور لوگوں کو مختلف منافع بخش سکیموں کا لالچ دیکر لاکھوں روپے بٹورتے ہیں کمپنی کے تمام سٹاف کے معاملات کو ملک کے دیگر بڑے شہروں کراچی سے مس ارم جبکہ اسلام آباد سے شہروز م دیکھتے اور لوگوں سے بٹوری ہوئی تمام رقم دوبئی میں بیٹھے ماسٹر مائنڈ کمپنی کے مالک محمد آصف کو بھیجی جاتی تھی جو کہ پاکستان میں گلشن اقبال کراچی کا رہنے والا ہے جبکہ موقع پر دفتر میں اپنی رقوم کی واپسی کی غرض سے آ ئے ہوئے چند افراد جن میں شکیل احمدشہزاد اور محمد عارف نے میڈیا کو اپنے موقف میں بتایا کہ یہ ایک فراڈ کمپنی ہے جو ایک منظم پلان کے تحت میٹھی زبان استعمال کر کے منافع اور کم شرح سود کا لالچ دے کر لوگوں سے لاکھوں روپے بٹور رہے ہیں اور اس کمپنی کا ہر ملازم ہر نئے آ نے والے فرد کو اپنا عہدہ بدل کر بتاتا ہے۔ متاثرین نے ڈی پی او اسد سرفراز سے اپیل ہے کہ کمپنی کے تمام سہولت کاروں کے خلاف فوری کاروائی کریں۔
دربدر