جماعت اسلامی کا قبائل کے حقوق کیلئے تحریک چلانے کا اعلان 

جماعت اسلامی کا قبائل کے حقوق کیلئے تحریک چلانے کا اعلان 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


     پشاور(سٹی رپورٹر)جماعت اسلامی نے قبائل کے حقوق کے لیے تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔ تحریک کے سلسلے میں امن کاروان کا آغاز 15 مارچ سے باجوڑ سے کیا جائے گا جو 19مارچ کو وزیرستان میں اختتام پذیر ہوگا۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق، امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا پروفیسر محمد ابراہیم خان، سینیئر مشتاق احمد خان، نائب امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا عنایت اللہ خان اور دیگر قائدین شرکت اور خطاب کرینگے۔ اس بات کا فیصلہ المرکز الاسلامی پشاور میں قائم مقام امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا عبدالواسع کی صدارت میں منعقدہ اجلاس میں کیا گیا۔ اجلاس میں تحریک حقوق قبائل کے صدر شاہ فیصل آفریدی، امیر جماعت اسلامی ضلع خیبر محمد رفیق آفریدی، اول گل آفریدی اور نوید خان مہمند شریک تھے۔ اجلاس میں امن کاروان کے لیے منصوبہ بندی کی گئی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے قائم مقام امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا عبدالواسع نے کہا کہ قبائلی اضلاع کی پسماندگی کا شکار ہیں۔ یہاں کی پسماندگی کو دور کرکے پاکستان کے دیگر اضلاع کی طرح ترقی دی جائے۔ حکومت فاٹا اصلاحات پر سر تاج عزیز کمیٹی کی سفارشات سے مختلف حیلے بہانے بنا کر بھاگ رہی ہے جو کہ قبائلیوں کی حق تلفی ہے، حکومت فوری طور پر کمیٹی کی سفارشات پر من و عن عمل کر تے ہوئے سالانہ 100 ارب اور 10سالوں میں 1000ارب روپے دیکر وعدہ پورا کرے، انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع کے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار کے بہتر مواقعے فراہم کرنے کیلئے بلا سود قرضے دیئے جائیں۔ قبائلیوں کی ملک کی خاطر قربانیوں کو مد نظر رکھتے ہوئے ملک کے معزز شہری کا حق دیا جائے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ قبائلی اضلاع میں مسمار گھروں کیلئے معاوضے کی فوری ادائیگی یقینی بنائی جائے۔ ہر ضلع میں یونیورسٹیاں،کالجز اور سکولز بنائے جائیں اور تباہ شدہ انفراسٹرکچر کی بحالی کی جائے۔ قبائلیوں کا بھی حق ہے کہ دیگر پاکستانیوں کی طرح ان کو بھی صحت کی سہولیات گھر کی دہلیز پر میسر ہوں لیکن افسوس ناک امر ہے کہ 20 ہزار مربع میل کے علاقوں میں کوئی میڈیکل کالج اور بڑا ہسپتال نہیں۔ فوری صحت کی سہولیات دینے کیلئے عملی اقدامات اٹھائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ قبائلی نوجوانوں کو تعلیم کے حصول میں آسانیاں دی جائیں اور ان کیلئے وظائف کا اجزائکیا جائے۔ قبائلی اضلاع میں معطل شدہ خاصہ دار فورس کو بحال کیا جائے،افغانستان کے ساتھ تمام تجارتی راستوں کو کھولا جائے،قبائلی اضلاع میں فوری اور سستے انصاف کی فراہمی کیلئے جرگہ سسٹم بحال کیا جائے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ جماعت اسلامی ہمیشہ کی طرح قبائلی عوام کے حقوق کے لیے آواز اٹھاتی رہے گی۔ ہم کبھی قبائلی عوام کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔