حکومت نے جا ن بوجھ کر ہیڈکوارٹر کے مسئلے پر محسود قبائل میں پھوٹ ڈالی،ملک اے ڈی محسود

حکومت نے جا ن بوجھ کر ہیڈکوارٹر کے مسئلے پر محسود قبائل میں پھوٹ ڈالی،ملک اے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ٹانک(نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان اپر وزیرستان کی مستقل ابادکاری کیلئے ہیڈکوارٹر کی تعمیر علاقے کے وسط میں ہونی چاہیے نہ کہ اپر وزیرستان کے داخلی راستے پر. صوبائی حکومت نے جلدبازی میں علاقائی صورت حال کاجائزہ لیئے بغیر اپنی سہولت کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے چند مفاد پرست ٹولے کو محسود قوم کا نمائندہ ظاہر کرکے اپر وزیرستان کی دائمی بربادی کا نوٹیفیکشن جاری کردیا. سرکردہ قبائلی رہنما ملک اے ڈی محسود نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے بغیر ٹھوس منصوبہ بندی اور علاقائی عوام کی مشاورت کے بغیر ایک مخصوص ٹولے کو ربڑ سٹیمپ کے طور پر استعمال کرکے اپنی ترجیحات کے مطابق اسپینکئی راغزائی کے مقام پر ہیڈکوارٹر کی تعمیرکا پروانہ جاری کردیا جو کسی بھی لحاظ سے اپروزیرستان کی مستقل ابادکاری کیلئے فائدہ مند نہیں ہے.انہوں نے کہا کہ حکومت نے جا ن بوجھ کر ہیڈکوارٹر کے مسئلے پر محسود قبائل میں پھوٹ ڈلوائی تاکہ اپنی مرضی کا فیصلہ عوام پرمسلط کرسکے. انکا مزیدکہنا تھا کہ علاقائی عوام کو سوچے سمجھے منصوبے کے تحت گمراہ کیا گیا کہ اسپینکئی راغزائی ہیڈکوارٹر کی تعمیر کیلئے سب سے موزوں علاقہ ہے اورعوام کو یہ باورکرایا گیا کہ اسپینکئی راغزائی درے محسود قبائل کیلئے قابل رسائی ہے اور اس کے گردونواح میں مستقل ابادی موجود ہے اور موسم بھی معتدل ہے. ان باتوں کو جواز بنا کرحکومت نے ہیڈکوارٹر کی تعمیر کا غیر دانشمندانہ فیصلہ عوام پر تھوپ دیا. انہوں نے حکومت سے یہ سوال اٹھایا کہ سپینکئی رغزائی اپر وزیرستان کا مرکز نہیں بلکہ داخلی راستے پر واقع  ہے تو کیا کسی علاقے میں ہیڈکوارٹر اسلئے بنائے جاتے ہیں کہ وہاں تک رسائی اسان ہو؟ انہوں نے کہا کہ کیا حکومت نے اپریشن راہ نجات شروع کرنے سے پہلے علاقائی عوام کو اعتماد میں لیا تھا اگر نہیں تو پھر ہیڈ کوارٹر کے حوالے سے وہ کیوں غیر منتخب اور عوام میں جڑیں نہ رکھنے والوں کی رضامندی کو پوری قوم کی رضامندی ظاہر کرکے اپنی مرضی کی جگہ پر ہیڈکوارٹر تعمیر کیاجارہا ہے جو کسی بھی طورپر اپروزیرستان کی مستقل ابادکاری کیلئے سودمند نہیں ہے.انہوں نے ارباب اختیار سے پرزور مطالبہ دہرایا کہ حکومت فی الفور متنازعہ نوٹیفیکیشن واپس لے اورحقائق پر مبنی فیصلے کرے اورہیڈکوارٹر کو اپروزیرستان کے بلکل وسط میں تعمیر کرے جس سے پورا اپرو زیرستان تاریکیوں کے دور سے نکل کر ترقی کی شاہراہ پر گامزن ہو اور اس کیلئے کسی سے مشاورت کی ضرورت نہیں ہے.