آبادی تناسب سے  رعایتی آٹے کی تقسیم جاری ہے: صوبائی وزراء

    آبادی تناسب سے  رعایتی آٹے کی تقسیم جاری ہے: صوبائی وزراء

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


       پشاور(سٹی رپورٹر) نگراں وزیر برائے خوراک و محکمہ آبپاشی فضل الٰہی،نگراں صوبائی وزیر محنت،ایکسائز ٹیکسیشن اینڈ نارکوٹکس کنٹرول خیبرپختونخوا منظور آفریدی اور وزیر برائے جنگلات،انوائرنمنٹ،وائلڈ لائف اور کلائمیٹ چینج بحت نواز خان کے زیر صدارت صوبے میں سبسڈائزڈ آٹے کے تقسیم کے حوالے سے جائزہ اجلاس جمعہ کے روز پشاور میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں ایڈیشنل سیکرٹری محکمہ خوراک، ڈائریکٹر فوڈ، ڈائریکٹر آپریشن حلال فوڈ اتھارٹی و دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس کو صوبے کے تمام اضلاع میں آبادی کے تناسب سے سبسڈائذڈ آٹے کی تقسیم اور سالانہ سٹاک کے حوالے سے تفصیلی بریفننگ دی گئی۔ اجلاس میں صوبائی وزیر خوراک نے متعلقہ حکام کو ہدایت دی کہ ھر صورت سبسیڈائز آٹے کی منصفانہ تقسیم کو یقینی بنانے کیلئے تمام ڈیلرز کی باقاعدگی سے نگرانی کی جائے اور جو بھی خرد برد میں ملوث پایا جائے اسکے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے، اس موقع پروزیر خوراک فضل الٰہی کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کمزور شہریوں کو آٹے کی مد میں ریلیف پر پینتیس ارب روپے خرچ کر رہی ہے جس کا مقصد صوبے کے کمزور طبقے کو استفادہ پہنچانا ہے. اس موقع پر نگراں وزیر محنت ایکسائز ٹیکسیشن اینڈ نارکوٹکس کنٹرول خیبرپختونخوا حاجی منظور آفریدی نے ضلع خیبر میں سبسڈائزڈ آٹے کی منصفانہ تقسیم پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ تحصیل تیراہ کو ابادی کے تناسب سے سبسڈائذڈ آٹے اور کوٹہ کی ترسیل جلد از جلد ممکن بنائی جائے۔ متعلقہ حکام نے بریفننگ دیتے ہوئے بتایا کہ قبائلی ضلع خیبر کے تحصیل تیراہ میں بہت جلد سبسڈائزڈ آٹے کی تقسیم شروع ہونے جا رہی ہے۔ نگراں وزیر محنت ایکسائز ٹیکسیشن اینڈ نارکوٹکس کنٹرول نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کو ریلیف دینے کے لیے تمام تر ممکن وسائل بروئے کار لائیں جائینگے۔