چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ محمد امیر بھٹی کی وکلاء، جرنلسٹس سے ملاقات، کورٹ روم کا بھی افتتاح

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ محمد امیر بھٹی کی وکلاء، جرنلسٹس سے ملاقات، کورٹ روم ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
ملتان( خصو صی پورٹر) لاھور ھائی کورٹ کے چیف جسٹس مسٹر جسٹس محمد امیر بھٹی نے کہا ھے کہ مثبت رپورٹنگ سے مسائل کے حل میں نہ صرف مدد ملتی ھے بلکہ سچ تک کی رسائی میں بھی آسانی ھوتی ھے ۔ مظلوم طبقہ کو بار اور بینچ کے ساتھ ساتھ میڈیا سے بھی انصاف ھی کی(بقیہ نمبر43صفحہ6پر )
 امید ھوتی ھے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ھائی کورٹ بار میں کورٹ رپورٹرز روم کے افتتاح کے موقعہ پر کیا ۔ اس موقعہ پر کورٹ رپورٹرز ایسوسی ایشن کے رھنماوں سمیت بار عہدے داروں سمیت دیگر افراد کی بڑی تعداد بھی موجود تھی ۔ اس موقع پر انہوں نے کورٹ روم کا افتتاح کیا اور خود بھی کمرے میں جا کر بیٹھے ۔ اس دوران انہوں نے پیشہ صحافت سے متعلق اپنے تجربات سے صحافیوں اور وکلا نمائندگان کو آگاہ کیا ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پیشہ وکالت کی طرح پیشہ صحافت بھی ایک مقدس فریضہ ہے ۔ دکھی انسانیت کی خدمت کر کے ہم دراصل اللہ کا قرب حاصل کرتے ہیں ۔ اس موقع پر کورٹ رپورٹرز محمد نوید شاہ ، یوسف عابد ، ضیا الحق خان ، مہر عمران نواز ، حسیب اعوان ، عامر مشتاق ، عبدالستار قمر , جان شیر خان ، صدر ھائی کورٹ بار میاں عادل مشتاق ، جنرل سیکرٹری ھائی کورٹ بار ملک ارشد بھٹی ، اورنگزیب بلوچ اور دیگر بھی موجود تھے ۔چیف جسٹس لاھور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد امیر بھٹی نے کہا ھے کہ بار اور بینچ کے ملکر چلنے سے عوام کو انصاف کی فراہمی میں آسانی پیدا ھوتی ھے ۔ وکلا کے کندھوں پر بھاری ذمہ داری عائد ھوتی ھے ۔ جب وکلا کا تعاون ھوگا تو کیسز نمٹانے میں بھی آسانی ھوگی ۔