"شعیب اختر کو چیئرمین پی سی بی بننے کیلئے پہلے بی اے کرنا پڑے گا" رمیز راجہ نے جواب دیدیا

"شعیب اختر کو چیئرمین پی سی بی بننے کیلئے پہلے بی اے کرنا پڑے گا" رمیز راجہ نے ...
سورس: Twitter/@iramizraja

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ویب ڈیسک)پی سی بی کے سابق چیئرمین رمیز راجہ نے شعیب اختر کی جانب سے کی جانے والی تنقید کا زور دار جواب دیتے ہوئے رد عمل دیدیا ہے، شعیب اختر نے انٹرویو میں کہا کہ میں اگر چیئرمین ہوتا تو لڑکوں کو آسٹریلیا میں آزادی دیتا کہ ساڑھے 7 کے بعد جاؤ اور کلچر میں اِن ہوجاؤ۔رمیز راجا نے اس پر ردعمل دیا اور کہا پہلے چیئرمین بننے کے لیے انہیں کم از کم بی اے کرنا پڑے گا۔

نجی ٹی وی جیونیو زکے مطابق رمیز راجا نےشعیب اختر کے اپنے بارے میں دیئے گئے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ میں اس کا کیا جواب دوں آپ کو؟ کئی لوگوں کو غلط فہمی ہوتی ہے، یہ لوگ غلط فہمی کے سپر سٹار ہیں، ان کی کامران اکمل اور شاہد آفریدی کے ساتھ بھی ہوئی تھی، یہ جو برانڈ برانڈ کرتے ہیں، برانڈ بننے سے پہلے انسان بنیں، انسان بنیں گے تو برانڈ بنیں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی کرکٹ کی سطح پر نیچے جانے کی اہم وجہ یہ ہے کہ ہمارے چند سابق کھلاڑی وہ اس طرح کی باتوں سے ہمارے کرکٹ کے برانڈ کو نیچے گراتے ہیں۔

رمیز راجہ کا کہناتھا کہ یہ ہمارے پڑوسی ملک میں کبھی نہیں ہوگا کہ سنیل گواسکر، راہول ڈریوڈ کی پتلون اتار رہے ہیں یا سچن ٹنڈولکر ، گنگولی کی پتلون اتار رہے ہیں، یہ پاکستان میں کلچر بن چکا ہے کہ جس کا جو کام ہے اسے کرنے نا دیا جائے اور خوامخواہ میں ان پر انگلیاں اٹھائی جائیں۔رمیز راجا نے کہا دور رہ کر ہر کوئی تنقید کر سکتا ہے لیکن اس گند میں معاملات کو ٹھیک کرنے کوئی نہیں آتا۔

یاد رہے کہ  شعیب اختر نے بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ میں زیادہ رمیز راجا سے ملتا جلتا نہیں ہوں لیکن جو لوگوں سے ان کے بارے میں سنا ہے کہ بہت سے لوگ ان سے خوش نہیں تھے۔رمیز راجا سے نا ہی لوگ کرکٹ بورڈ کے اندر خوش تھے نا آگے پیچھے، جو مجھے اطلاع ملی ہے، وہ پی سی بی چیئرمین بے نقاب ہونے کے لیے بنے تھے، یہ کافی افسوس کی بات تھی، مجھے ان سے متعلق لوگوں کا ردعمل ٹھیک نہیں ملا۔

مزید :

کھیل -