ملتان: لاغر‘ بیمار جانوروں کی سلاٹرنگ میں اضافہ‘ ٹھیکیدار کی لوٹ مار

ملتان: لاغر‘ بیمار جانوروں کی سلاٹرنگ میں اضافہ‘ ٹھیکیدار کی لوٹ مار

  



ملتان (سپیشل رپورٹر)میٹرو پولیٹن کارپوریشن ملتان میں قاسم بیلہ، مظفر آباد سمیت2لاکھ آبادی شامل کرلی گئی، سلاٹر ہاوس کے ٹھیکہ دار نے ملتان شہر اور اضافی علاقوں سے روزانہ 50(بقیہ نمبر36صفحہ12پر)

ہزار روپے کی ریکوری شروع کردی ہے جس سے ملتان شہر و گردونواح میں لاغر، بیمار اور مرے ہوئے جانوروں کی سلاٹرنگ میں بے تحاشا اضافہ ہوا ہے۔ تفصیل کے مطابق ملتان کا میٹرو پولیٹن کارپوریشن کا درجہ مل چکا ہے، سابق میونسپل کارپوریشن ملتان میں 68یونین کونسلیں شامل تھیں اب 92یونین کونسلیں میٹرو پولیٹن کارپوریشن میں شامل ہیں، میٹرو پولیٹن ملتان میں تقریباً2لاکھ کی آبادی میں اضافہ ہوا ہے۔ چھ ماہ قبل سلاٹر ہاوس کا ٹھیکہ عامر جاوید نامی شخص نے 60لاکھ کا لیا تھا، آفیسران کی ملی بھگت سے 14ملازمین کے بجائے 12ملازمین کی تنخواہیں کارپوریشن میں جمع کرانیکا معاہدہ کیا گیا۔ میٹرو پولیٹن کارپوریشن کے ایم او سروسز کی جانب سے آباد ی کے لحاظ سے سلاٹرہاوس کا ٹھیکہ 30لاکھ روپے بڑھانے کی رپورٹ کردی گئی ہے جس پر عمل درآمد نہ ہوسکا ہے دوسری طرف سلاٹر ہاوس ٹھیکہ دار نے ملتان و گردونواح میں غیر قانونی سلاٹرنگ کاسلسلہ جاری ہے،لاغر، بیمار اور مرے ہوئے جانور ذبح کرکے گوشت شہریوں کو فروخت کیا جارہا ہے۔ غیر قانونی سلاٹرنگ کو کھلی چھوٹ دینے پر سلاٹر ہاوس ٹھیکہ دار روزانہ 50ہزار روپے کی اضافی بھتہ وصولی کر رہا ہے۔ اس ضمن میں چیف آفیسر میٹرو پولیٹن کارپوریشن شاہد اقبال نے اپنے موقف میں کہا ہے کہ 5فروری 2020کے بعد بلدیاتی نظام کے مکمل فعال ہونے کے بعد ٹھیکہ دار سے اضافی ریکوری کی جائے گی، شہر میں غیر قانونی سلاٹرنگ روکنے کیلئے کسی بھی دباو کو خاطر میں نہیں لایا جائے گا۔

لوٹ مار

مزید : ملتان صفحہ آخر