مہنگائی‘ بے روزگاری کیخلاف جماعت اسلامی کا شہر شہر احتجاج‘ حکومت مخالف نعرے

مہنگائی‘ بے روزگاری کیخلاف جماعت اسلامی کا شہر شہر احتجاج‘ حکومت مخالف ...

  



ملتان‘ وہاڑی‘ بہاولپور‘ وجھیانوالہ‘ رحیم یار خان‘ بورے والا (سٹی رپورٹر‘ بیورو رپورٹ‘ نمائندگان پاکستان) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کی اپیل پر جماعت اسلامی ضلع ملتان کے تحت آٹا، چینی بحران، مہنگائی، بیروزگاری اور اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف کچہری (بقیہ نمبر60صفحہ7پر)

چوک پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ احتجاجی مظاہرے کی قیادت صوبائی سیکر ٹری جنرل صہیب عمار صدیقی، امیر جماعت اسلامی ضلع ملتان ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی نے کی۔ اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے صوبائی سیکر ٹری جنرل صہیب عمار صدیقی نے کہا کہ آٹے اور چینی کا مصنوعی بحران پیدا کرکے عوام کو بے وقوف بنایا جارہا ہے ٹرانسپیرنسی انٹر نیشنل کی رپورٹ سے ثابت ہوگیا کہ موجودہ حکومت کرپٹ افراد کا ٹولہ ہے۔وزیر اعظم عمران خان کہتے ہیں کہ ان کی تنخواہ میں ان کا اپنا گھر کا خرچہ پورا نہیں ہوتا۔ اگر وزیر اعظم لاکھوں روپے تنخواہ وصول کرنے کے باوجود اپنا گھر کا ماہانہ خرچہ برداشت نہیں کرسکتے تو وہ غریب مزدور جس کی تنخواہ تبدیلی کے دور حکومت میں صرف 12ہزار روپے ہے وہ کیسے اپنے بیوی بچوں کا پیٹ پالتا ہوگا؟ بدقسمتی تو یہ ہے کہ حکومت کی ترجیحات میں عوام کو ریلیف فراہم کرنا شامل نہیں۔ آٹا نایاب ہونے کے ساتھ ساتھ سبزیوں، دالوں اور مرغی کے گوشت کی قیمتیں بھی عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہوگئی ہیں۔ تنخواہ دار طبقے کے چودہ طبق روشن ہوگئے ہیں۔ ایک طرف ڈالر کی قیمت بڑھنے سے روپے کی قدر میں 30فیصد سے زائد کمی ہوچکی ہے۔ دوسری طرف مہنگائی میں بھی 40فیصد تک اضافہ ہوگیا ہے۔ بازار میں دالوں، سبزیوں، پھلوں اور دیگر اشیاء خوردونوش کی قیمتوں کو آگ لگی ہوئی ہے۔ اشیاء خوردونوش اور ضروریات زندگی کی بات کی جائے تو رواں مالی سال کے دوران ٹماٹر 124فیصد، چینی 30فیصد اور دالیں 35فیصد تک مہنگی ہوئی ہیں۔انہوں نے کہاکہ قرضوں میں اضافے کی بات کی جائے تو حکومت کو پہلے ایک سال کے دوران پاکستان کا غیر ملکی قرضہ88ارب 19کروڑ 90لاکھ امریکی ڈالر تھا جبکہ ڈیڑھ سالوں میں 11سو ارب روپے کا اضافہ ہوچکا ہے۔۔ امیر جماعت اسلامی ضلع ملتان ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گندم چور آٹا خور حکمرانوں نے عوام سے دو وقت کا نوالہ چھین لیا موجودہ حکمرانوں نے اپنے افراد کو نوازنے کے علاوہ کچھ نہیں کیا۔ ملک میں جاری مہنگائی کا طوفان بر پا کرنے والوں کی واپسی کا وقت آگیا ہے عوام کی بیداری کے ذریعے ملک میں تبدیلی ممکن ہے آٹے چینی کا بحران حکمرانوں کا اپنا پیدا کیا ہوا ہے ملک میں بڑھتی ہوئی کرپشن نے کرپشن مکاؤ منصوبے کو فلاپ کردیا ہے پاکستان کی ضرورت دیانتدار و ایماندار قیادت ہے جو ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرسکتی ہو موجودہ حکومت کرپٹ افراد کا ٹولہ ہے جو ملک کی تباہی اور بربادی کا ذمہ دار ہے ملک میں مہنگائی کے ذریعے عوام سے دووقت کی روٹی کا نوالہ چھینا جا رہا ہے عوام خود کشیاں کرنے پر مجبور ہیں۔ موجودہ حکومت قرضوں پر ملک چلانے کی ناکام کوشش کر ر ہی ہے۔ اس سے غریب عوام کی حالت زار کبھی بدل نہیں سکتی۔ َ عوام سوال پوچھتے ہیں کہ کہاں ہیں 50 لاکھ گھر اور1کروڑ نوکریاں؟ ہم سمجھتے ہیں کہ حکمران عوام کو ریلیف فراہم کرنے میں بری طرح ناکام ہوچکے ہیں۔ ملک بھر میں آٹے کی قیمتوں میں اضافے کے بعد چینی بھی مہنگی کردی گئی جس سے عوام کی پریشانی مزید بڑھ گئی ہے۔گندم بیرون ملک29روپے کلو کے حساب سے ایکسپورٹ کی گئی جبکہ پاکستان میں عوام کو70روپے کلو فروخت کی جا رہی ہے۔ احتجاجی مظاہرے میں ضلعی سیکر ٹری جنرل چودھری اطہر عزیز ایڈووکیٹ، چودھری خالد منیر، چودھری فیاض اسلم،چودھری محمد امین،مرزا تنویر،فرحال ملک، شیخ اسرار حسین، عبدالرحمن حیدری، سعد اللہ شیخ،شیخ قیصر اقبال،میاں قطب جمیل،چودھری مسعود،پروفیسر علی اصغر سلیمی،اسد منیر،ڈاکٹر خالد رشید،شاہد عباس، رانا سلیم اللہ خان، عبدالماجد خان خاکوانی، عرفان عرشی،ثاقب رانا، آصف شاہ، ریاض، طالب حسین کے علاوہ ہزاروں ارکان وکارکنان نے شرکت کی۔ ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی,بے روزگاری اور کرپشن کے خلاف جماعت اسلامی کے زیراہتمام فیصل مسجد کے باہر احتجاج کیا گیا احتجاجی مظاہرہ کی قیادت ضلعی امیر جماعت اسلامی سید جاوید حسین شاہ نے کی جبکہ مظاہرہ میں جماعت اسلامی کے عہدیداران حاجی طفیل وڑائچ،راؤ خلیل احمد،شکیل احمد رضا،انجینئر محمد رفیق،عبدالخالق شاکر، ڈاکٹر محمد اقبال، مفتی حفیظ الرحمان سمیت ورکرز کی کثیر تعداد شریک ہوئی احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی امیر جماعت اسلامی سید جاوید حسین شاہ نے کہا کہ حکومتی نااہلی کے سبب ملک میں آٹے اور چینی کا بحران پیدا ہوچکا ہے موجودہ دور حکومت میں کرپشن کے ریکارڈ قائم ہورہے ہیں اور حج کی فیسوں میں غیرمعمولی اضافہ کی مذمت کرتے ہیں اگر فوری طور پر مہنگائی,بے روزگاری اور کرپشن پر قابو نہ پایا گیا تو جماعت اسلامی ملک گیر احتجاج کرے گی مظاہرین نے مہنگائی بیروزگاری اور حکومت کے خلاف بھرپور نعرے بازی کی۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کی اپیل پر پورے ملک کی طرح بہاول پور میں جماعت اسلامی ضلع ملتان کے زیر اہتمام فرید گیٹ پرآٹا، چینی کے بحران مہنگائی اور اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف ”کے خلاف نائب امیر صوبہ جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر کی قیادت میں احتجاجی کیمپ لگایا گیا۔احتجاجی کیمپ میں شہریوں کی سہولت کے لیے تین روٹی فروخت کرنے کے لیے تنور بھی لگایا گیا جہاں بڑی تعداد میں شہریوں نے سستی روٹی خریدی۔احتجاجی کیمپ میں کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے سید ذیشان اختر نے کہا کہ جماعت اسلامی عوام کی پیٹھ پر مہنگائی کے کوڑے مارنے والے بے رحم اور بے حس حکمرانوں کے خلاف میدان میں آگئی ہیں۔ اب مہنگائی یا حکمرانوں کو بھگا کر دم لیں گے۔ جو لوگ گھر نہیں چلاسکتے تھے انہیں ملک پر مسلط کر دیا گیاہے۔ وزیراعظم کو جہاز میں گھما نے اور ان کا کچن چلانے والے عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈال رہے ہیں۔ گندم اور چینی پیدا کرنے والا دنیا کا پانچواں بڑا ملک آٹے اور چینی کے بحران سے دوچار ہے۔ حکومت نے لینڈ مافیا، ڈرگ مافیا اور شوگر مافیا کو تمام اختیارات دے کر بلی کو دودھ کی رکھوالی پر بٹھا دیا ہے۔اگر وزیراعظم اور ان کی بیوی کا گزارہ دو لاکھ میں نہیں ہورہا تو پندرہ بیس ہزار کمانے والوں کا گزارا کیسے ہوسکتا ہے۔مدینہ کی ریاست کو بدنام کرنے اور عوام کا خون نچوڑنے والوں کو قبر میں بھی سکون نہیں ملے گا۔ مدینہ کی ریاست کے حکمران، انسان تو انسان،جانوروں کے بھوکا رہنے کے خیال سے بھی تڑپ جاتے تھے اور اس وقت تک خود نوالہ نہیں لیتے تھے جب تک ریاست کے غریب غربا بھی پیٹ بھر کر نہیں کھا لیتے تھے۔امیر پی پی 245 نصراللہ ناصرنے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ شوگر اور آٹا ملزمالکان اور آٹا و چینی چور حکومت میں بیٹھے ہوں تو عوام کو سستا آٹا اور چینی کیسے مل سکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ خود حکومتی ارکان اور وزیر اعتراف کرتے ہیں کہ ملک میں گندم کی کوئی قلت نہیں، سرکاری گوداموں میں وافر مقدار میں گندم موجود ہے مگر پھر بھی غریب کو آٹا نہیں مل رہا۔ مہنگائی مافیانے سبزیاں اتنی مہنگی کررکھی ہیں کہ عام آدمی توایک طرف سفیدپوش طبقہ کواپنی سفیدپوشی کابھرم رکھنابھی مشکل ہوتاجارہاہے سبزی مافیانے حکومت اورانتظامیہ کی طرف سے روزانہ کی بنیادپرسبزیوں کے جونرخ مقررکئے جاتے ہیں عوام کیلئے ان نرخوں پرسبزیاں ملناایک خواب بن چکاہے حکومت پنجاب نے قیمت پنجاب کے نام سے جو ایپ متعارف کرائی ہے اس میں روزانہ کی بنیادپرپنجاب بھرکے اضلاع کیلئے اشیاء خوردونوش کی قیمتیں مقررکی جاتی ہیں اس کے علاوہ مارکیٹ کمیٹی بھی سبزی منڈی کے آڑھتیوں کے تعاون سے روزانہ نرخ مقررکرتی ہے لیکن یہ نرخنامہ محض ردی کاایک کاغذ ثابت ہورہاہے اورمہنگائی مافیااپنے مرضی کے نرخ وصول کرتاہے اورحکومت کے مقررکردہ نرخوں اورعام بازارمیں بعض سبزیوں کے نرخوں میں دوگنافرق بھی دیکھنے میں آرہاہے گزشتہ روزفروخت ہونے والی اورحکومت کے مقررکردہ سبزیوں کے نرخ اس طرح رہے۔کریلاحکومتی سبزیوں کے علاوہ پھلوں کے نرخ بھی آسمانوں سے باتیں کرتے دکھائی دیتے ہیں اس تمام ترصورتحال میں انتظامیہ،مارکیٹ کمیٹی،پرائس کنٹرول کمیٹیاں اورسپیشل مجسٹریٹس مہنگائی مافیاکے سامنے بے بس نظرآرہے ہیں جبکہ عوام مہنگائی مافیاکے ہاتھوں لٹنے پرمجبورہے انتظامی افسران اورذمہ داران ہرماہ پرائس کنٹرول کمیٹیوں کی میٹنگ بلاکراورفوٹوسیشن کرواکرحکومت پنجاب کوسب اچھاکی رپورٹ توبجھوادیتے ہیں لیکن عملی طورپران کاکارکردگی صفرہے۔ جماعت اسلامی کی اپیل پر ملک میں بد ترین مہنگائی کیخلاف ملک گیر احتجاج کے سلسلے میں رحیم یار خان میں بھی مہنگائی کیخلاف احتجاجی ریلی کا انعقاد کیا گیا جسمیں جماعت اسلامی کے کارکنان کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔کارکنان جماعت اسلامی نے پارٹی پرچم اور مہنگائی کیخلاف بیرز پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے اور حکومتی مہنگائی اور غریب کش پالیسیوں کیخلاف نعرے بازی کی۔ریلی بعد نماز جمعہ جامعیہ قادریہ مسجد بازار سے ہوتی ہوئی لنک روڈ نیو صادق بازار پر اختتام پذیر ہوئی۔جہاں پر قائدین جماعت اسلامی جن میں ضلعی نائب امیر جماعت اسلامی ڈاکٹر عمر فاروق نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملکی تاریخ کی بد ترین مہنگائی کا سبب اقتدار پر قابض مختلف مافیا ہیں چالیس چوروں کا ٹولہ دونوں ہاتھوں سے عوام کا خون نچوڑ رہاہے۔آٹا چینی و دیگر عوامی ضروریات زندگی کی اشیاء انہی چالیس چوروں نے اپنی گرفت میں کررکھی ہیں اور جب چاہیں قیمیتیں آسمانوں پر پہنچا کر راتوں رات اربوں کھربوں روپے جیبوں میں ڈال لیتے ہیں انھوں نے کہا کہ ملکی معیشت سودی نظام اور آئی ایم ایف کے رحم و کرم پر چل رہا ہے۔ضلعی رہنما جماعت اسلامی عابد حسین باجوہ نے کہا کہ ملکی تاریخ کے بد ترین مہنگائی نے عوام کو زندہ درگور کردیا ہے وزیر اعظم عمران خان نے تو عوام کو غربت مہنگائی بے روز گاری کرپشن اور عوام کی زندگیوں کو آسان بنانے کے نام پر اقتدار میں آئے مگر سب سے یوٹرن لے کر عوام کی زندگیا ں مہنگائی کے ہاتھوں اجیرن کر دیں اور انھوں نے کہا کہ جب تک اس نااہل حکومت سے چھٹکارہ حاصل نہیں کیا جاتا عوامی مسائل میں دن دگنی رات چگنی اضافہ ہی ہوتا چلا جائے گا۔ریلی سے سٹی امیر جماعت اسلامی طاہر غفور، شعیب الرحمان،اور جماعت اسلامی یوتھ سٹی جنرل سیکریڑی راجہ شہزاد ایوب نے بھی خطاب کیا۔ حکومت کی طرف سے مہنگائی،عوام دشمن اور ناکام معاشی پالیسیوں کے خلاف جماعت اسلامی کی مرکزی قیادت کی کال پر دیگر شہروں کی طرح بوریوالا میں بھی احتجاجی ریلی اور مظاہرہ،مظاہرین نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جس پر بڑھتی ہوئی مہنگائی پر حکومت کے خلاف نعرے درج تھے۔ مظاہرین کی قیادت امیر جماعت اسلامی بوریوالا عبدالوحید خالد کر رہے تھے۔ مظاہرین نے کہا کے تحریک انصاف کی حکومت کے گزشتہ 18 ماہ کے دور میں بڑھتی ہوئی مہنگائی نے عوام کا جینا دوبھر کر دیا ہے۔ حکومت کی ترجیحات میں عوام کو ریلیف فراہم کرنا شامل ہی نہیں۔حکومت کی غریب دشمن پالیسیوں سے غریب عوام بری طرح پِس چکے ہیں۔ آٹا نایاب ہونے کے ساتھ ساتھ سبزیوں اور دالوں کی قیمتیں بھی عام آدمی کی پہنچ سے دور ہو گئی ہیں۔احتجاجی ریلی میں امیر جماعت اسلامی میونسپل کارپوریشن باؤ اشفاق احمد،صدر الخدمت فاؤنڈیشن عطاالرحمن منا، تحصیل مہتمم جماعت اسلامی محمد رمضان سلیمی، ذکا الرحمن گجر، سلیم طاہر، عمران بابر، توصیف احمد،ابوھریرہ سمیت ورکرز نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر