فیڈمک میں 4لاکھ سے زائد ہنر مندوں کی ضرورت ہو گی

فیڈمک میں 4لاکھ سے زائد ہنر مندوں کی ضرورت ہو گی

  



فیصل آباد (اے پی پی)فیڈمک کے تینوں اقتصادی زونز میں اگلے 4سالوں کے دوران مختلف شعبہ جات میں مجموعی طو رپر 4لاکھ سے زائد تربیت یافتہ ملازمین کی ضرورت ہو گی لہٰذا تربیت یافتہ فورس کی فراہمی کیلئے جرمن ادارے جی آئی زیڈ،پنجاب ووکیشنل ٹریننگ کونسل اور فوجی فاؤنڈیشن کے ساتھ معاہدے حتمی مراحل میں داخل ہو گئے ہیں جس کے ساتھ ہی طے کردہ حکمت عملی کے مطابق تربیتی پروگرام پر عملدر آمد شروع کر دیا جائے گا نیز فیڈمک کی طرف سے انہیں اکنامک زون میں جگہ بھی فراہم کی جائے گی تاکہ یہ ادارے یہیں اپنے تربیتی مراکز قائم کر سکیں اور نوجوانوں کو ہنر سیکھنے کیلئے ادھر ادھر کے دھکے نہ کھانا پڑیں جبکہ اس حوالے سے انڈسٹری سے بھی مشاورت کی جا رہی ہے تاکہ ان کی مستقبل کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے افرادی قوت کوٹرینڈ کیا جا سکے۔فیصل آباد انڈسٹریل سٹیٹ ڈویلپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی کے چیئر مین میاں کاشف اشفاق نے اے پی پی کو بتایا کہ اس کے ساتھ ساتھ پہلے سے قائم فنی تربیت کے اداروں کو بھی افرادی قوت کی تربیت کے پراجیکٹ کا حصہ بنایا جائے گا اور درکار افرادی قوت کی جلد سے جلد تربیت کیلئے خصوصی سنٹر بنائے جائیں گے۔

انہوں نے بتایاکہ ا س سلسلہ میں مختلف شعبہ جات کیلئے درکار افرادی قوت کو پورا کرنے کیلئے لیبر کو ایڈوانس جاب کنٹریکٹ دے کر تربیت فراہم کی جائے گی اور تربیت مکمل ہوتے ہی انہیں ملازمت پر رکھ لیاجائے گا۔ انہوں نے بتایاکہ ایک اندازے کے مطابق ابتدائی مرحلہ میں آئندہ سال تک یہاں 70ہزار افراد کو روزگار ملے گا جبکہ پہلے سال میں صرف چینی زبان پر عبور رکھنے والے 20ہزار مقامی افراد کوملازمت ملے گی۔انہوں نے بتایاکہ سب سے اہم بات یہ ہے کہ فیڈمک نے اکنامک زونز کے قریبی علاقوں میں رہائش پذیر افراد کو ترجیحی بنیادوں پر روزگار کی فراہمی کا فیصلہ بھی کیا ہے۔انہوں نے بتایاکہ اس حوالے سے یہ طے کیا گیا ہے کہ 25فیصد ملازمتیں مقامی آبادی کو دی جائیں گی جبکہ اس کے ساتھ ساتھ اکنامک زون میں اراضی کی فروخت سے حاصل ہونے والی آمدنی کا ایک فیصد حصہ مقامی آبادی کی فلاح و بہبود پر خرچ کیا جائے گا۔

مزید : کامرس