این ایل سی نے چمن بارڈر ٹرمینل پر کارگو کی سکیننگ شروع کردی

    این ایل سی نے چمن بارڈر ٹرمینل پر کارگو کی سکیننگ شروع کردی

  



راولپنڈی(آئی این پی)نیشنل لاجسٹکس سیل (این ایل سی)نے حکومتی پالیسی اور قومی سلامتی کے تحت چمن بارڈر ٹرمینل پر افغانستان کیلئے تمام درآمدی اوربرآمدی کارگو کی اسکیننگ شروع کردی۔کارگو کی جانچ پڑتال کا مقصد تجارتی سامان کی آڑ میں ممنوعہ اشیاء کی درآمد اور برآمد کو روکنا، ایف بی آر کی محصولات بڑھانا اور انسداد سمگلنگ کی مد میں حکومت پاکستان کی مدد کرنا ہے۔ اس مقصد کیلئے چمن بارڈر ٹرمینل پر جدید اسکیننگ مشینیں نصب کی گئی ہیں جو کہ چالیس فٹ تک کے کنٹینر کو بغیر کھولے مکمل معائنے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔ ان مشینوں سے ممنوعہ اشیا کی روک تھام کے ساتھ ساتھ کسٹم کلیئرنس کے عمل میں مزید تیزی آئے گی۔گزشتہ ہفتہ کی شدید بارش اور برفباری سے کوئٹہ چمن شاہراہ کے ذریعے پاک افغان تجارتی سرگرمیاں متاثر ہوئیں جس سے خوجک ٹاپ کے دونوں اطراف کثیر تعداد میں کارگو کنٹینرز اور ٹرک پھنس گئے تھے۔ کارگو اسکیننگ کے خلاف چند کلیئرنگ ایجنٹس نے ہڑتال کی۔ ان دو وجوہات کی بنا پر پاک افغان سرحد پر کنٹینرز اور ٹرکوں کی بھیڑ لگ گئی تاہم انتظامیہ کی کوششوں سے کسٹم ایجنٹس نے ہڑتال کے خاتمے کا اعلان کیا اور اب تجارتی سرگرمیاں بحال ہو چکی ہیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ کارگو اسکیننگ بین الااقوامی طور پر سرحدپار تجارتی عمل کا لازمی جزو ہے۔ خطے کی مخصوص صورتحال کے پیش نظر پاک افغان سرحد پر کارگو اسکیننگ ناگزیر ہے جو نہ صرف قانونی تجارت کے فروغ کا باعث بنے گی بلکہ ممنوعہ اشیا کی درآمد پر قابو پانے میں بھی مددگار ثابت ہوگی۔

این ایل سی

مزید : پشاورصفحہ آخر