کیا واقعی ملتان میں زیر علاج چینی باشندہ کرونا وائرس سے متاثرہے؟ نشتر ہسپتال کے ایم ایس کا باقاعدہ بیان سامنے آگیا

کیا واقعی ملتان میں زیر علاج چینی باشندہ کرونا وائرس سے متاثرہے؟ نشتر ہسپتال ...
کیا واقعی ملتان میں زیر علاج چینی باشندہ کرونا وائرس سے متاثرہے؟ نشتر ہسپتال کے ایم ایس کا باقاعدہ بیان سامنے آگیا

  



ملتان (ڈیلی پاکستان آن لائن)ملتان کے نشتر ہسپتال میں کروناوائرس سے متاثرہ مریض کے زیرعلاج ہونے کے معاملے پر نشتر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر شاہد بخاری کا بیان بھی آگیا۔اپنے بیان میں انہوں نے کہا چینی مریض میں کوروناوائرس سے متعلق صرف شک ہے ۔ مریض میں کوروناوائرس سے متعلق ابھی تک کچھ نہیں کہا جاسکتا ۔انہوں نے کہاخون کے نمونے ٹیسٹ کیلئے اسلام آبادبھیج دیئے ہیں۔ڈاکٹر شاہد کے مطا بق چینی باشندہ کچھ روز قبل چین سے پاکستان پہنچا۔

قبل ازیں جیو اور اے آر وائی نیوز سمیت مختلف ذرائع ابلاغ نے شبہ ظاہر کیا تھا کہ تین روز قبل چین سے واپس آنے والے ایک چالیس سالہ چینی شہر کو اس مرض کے شبے میں ہسپتال میں لایا گیا ہے جہاں وہ آئسولیشن میں زیرعلاج ہیں۔کچھ اداروں نے اسے پاکستان میں کرونا وائرس کا پہلا کیس بھی قرار دیا تاہم وزارت صحت نے ان خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ تاحال کرونا کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا ہے۔

واضح رہے کہ چین میں کرونا وائرس کی انتہائی خطرناک وبا پھیل گئی ہے جس کی وجہ سے ا ب تک پچیس افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔انتظامیہ خطرناک وائرس کورونا کی وبا کو پھیلاو¿ سے روکنے کے لیے شدید جدوجہد کر رہی ہے۔ یہ سب ایک ایسے موقع پر ہو رہا ہے جب لاکھوں افراد نئے چینی سال کی تقریبات کی تیاریاں کر رہے ہیں۔بیجنگ اور ہانگ کانگ میں حکومت نے نئے سال کی بڑی تقریبات کو وائرس سے پھیلنے والے خطرے کے پیش نظر منسوخ کر دیا ہے تاکہ عوام آپس میں گھل مل نہ سکیں جس سے وائرس کے پھیلاو¿ کا خدشہ ہے۔

ووہان شہر اور ہوبائی صوبہ جہاں سب سے زیادہ مریضوں کی تشخیص ہوئی ہے وہاں انتظامیہ نے سخت اقدامات اٹھائے ہیں اور پبلک ٹرانسپورٹ کو مکمل طور پر بند کر دیا ہے۔

جمعے کو چینی حکام نے تصدیق کی ہے کہ اب تک 25 افراد وائرس کی وجہ سے ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ 830 افراد میں مرض کی تشخیص ہوئی ہے۔ان مریضوں میں سے 177 کی حلات تشویشناک ہے جوکہ 34 علاج کے بعد ہسپتال سے فارغ کر دیے گئے ہیں۔

مزید : قومی /تعلیم و صحت /علاقائی /پنجاب /ملتان