چین میں خطرناک وائرس پھوٹنے کے بعد ایک ہفتے میں ایک ہزار بیڈ کا ہسپتال بنانے کا اعلان، تعمیر کے حیرت انگیز مناظر

چین میں خطرناک وائرس پھوٹنے کے بعد ایک ہفتے میں ایک ہزار بیڈ کا ہسپتال بنانے ...
چین میں خطرناک وائرس پھوٹنے کے بعد ایک ہفتے میں ایک ہزار بیڈ کا ہسپتال بنانے کا اعلان، تعمیر کے حیرت انگیز مناظر

  



بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چین کے شہر ووہان میں جان لیوا وائرس تیزی سے پھیلنے کے بعد چینی حکومت نے شہر کے مضافات میں محض ایک ہفتے میں ایک ہزار بیڈ کا ہسپتال تعمیر کرنے کا عزم کیا ہے اور ہسپتال کی جگہ پر کام اس تیز رفتاری کے ساتھ جاری ہے کہ ویڈیو سامنے آئی تو پوری دنیا دنگ رہ گئی۔ میل آن لائن کے مطابق ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ درجنوں کرینیں، سینکڑوں ٹرک اور دیگر گاڑیاں مزدوروں اور کاریگروں کی ایک فوج کے ساتھ ہسپتال کی اس جگہ پر تن دہی سے کام پر جتی ہوئی ہیں۔ کھدائی کے لیے بیک وقت تین درجن سے زائد کرینیں کام کر رہی ہوتی ہے جو فضاءسے بنائی گئی ویڈیو میں انتہائی حیران کن منظر پیش کر رہی ہوتی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اس ہسپتال کی تعمیر صرف 6دن میں مکمل کی جائے گی۔ اس ایمرجنسی منصوبے کے لیے ہزاروں مزدوروں اور کاریگروں کو چین کے نئے سال کی چھٹیاں منسوخ کرکے کام پر پہنچنے کو کہا گیا۔ واضح رہے کہ چین میں کورونا وائرس نامی یہ وباءڈیڑھ ماہ قبل پھیلی۔ یہ وائرس پہلی بار دنیا میں دیکھا گیا ہے جس کی وجہ سے لوگ نمونیا کا شکار ہو رہے ہیں اور موت کے منہ میں جا رہے ہیں۔ اب تک چین میں 1ہزار سے زائد افراد اس وائرس کا شکار ہو کر ہسپتال پہنچ چکے ہیں جبکہ 41کی ہلاکت ہو چکی ہے۔ گزشتہ روز ایک خوفناک ویڈیو سامنے آئی تھی جس میں چین میں اس وائرس کے باعث لوگوں کو سڑک پر چلتے یا کھڑے ہوئے اچانک کسی بت کی طرح دھڑام سے گرتے دکھایا گیا تھا۔ ایسے ہولناک مناظر لوگوں نے ڈراﺅنی فلموں میں ہی دیکھے تھے جو اب اس جان لیوا وائرس کے باعث چین میں حقیقت میں دیکھنے کو مل رہے ہیں۔ یہ وائرس 11دیگر ممالک تک بھی پہنچ چکا ہے، جن میں امریکہ، جاپان، تھائی لینڈ اور تائیوان و دیگر شامل ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی