چودھری شجاعت حسین سے ایسے سیاست دان کی ملاقات کہ سیاسی ایوانوں میں کھلبلی مچ جائے گی

چودھری شجاعت حسین سے ایسے سیاست دان کی ملاقات کہ سیاسی ایوانوں میں کھلبلی مچ ...
چودھری شجاعت حسین سے ایسے سیاست دان کی ملاقات کہ سیاسی ایوانوں میں کھلبلی مچ جائے گی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ق کے صدر اور سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین ایک بار پھر متحرک ہو گئے،بلوچستان  کے وزیر اعلیٰ جام کمال خان کو للکارنے والے میر عبد القدوس بزنجو چوہدری شجاعت حسین کی رہائش گاہ پہنچ گئے۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان اسمبلی کے سپیکر عبد القدوس بزنجو  اپنی ہی حکومت کے خلاف برسنے کے بعد سیاسی طور پر متحرک ہو گئے ہیں اور مختلف سیاسی قائدین سے مشاورت کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔بلوچستان کی بگڑتی سیاسی صورتحال پر مشاورت کے لئے سپیکر صوبائی اسمبلی عبد القدوس بزنجو اسلام آباد میں پاکستان مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین سے ملنے اُن کی رہائش گاہ پہنچ گئے  اور چوہدری شجاعت سے تفصیلی ملاقات کی ،اس موقع پر  موجودہ ملکی اور خصوصی طور پر بلوچستان کی  سیاسی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

واضح رہے کہ دو دن قبل سپیکر بلوچستان اسمبلی عبدالقدوس بزنجو نے وزیر اعلیٰ جام کمال کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ اس سے بدتر حکومت اس سے پہلے کبھی نہیں دیکھی،پارٹی میں رہتے ہوئے ان ہاؤس تبدیلی چاہتے ہیں، ایسا نہ ہونے کی صورت میں اپوزیشن کے ساتھ مل کر بلوچستان کا نیا وزیراعلیٰ لائیں گے،بلوچستان عوامی پارٹی کے بیشتر اراکین ناراض ہیں، وقت آنے پر سب سامنے آئیں گے،جب آپ سپیکر بن جاتے ہیں تو پارٹی سے بالاتر ہو کر سوچنے لگتے ہیں،ہم پارٹی کے اندر تبدیلی کی بات کر رہے ہیں،اس پارٹی کو ہر صورت عوامی پارٹی بنا کر دم لیں گے۔انہوں نے کہا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ وزیراعلیٰ ہاؤس میں اب عوام تو دور کی بات خود وزرا نہیں جا سکتے،صوبہ بدحالی کا شکار ہو چکا ہے،اس سے بدتر حکومت صوبے کی تاریخ میں کبھی نہیں آئی،جو شخص ایک پارٹی نہیں چلا سکتا، وہ حکومت کیسے چلائے گا؟۔

دوسری طرف عبدالقدوس بزنجو کی جانب سے وزیراعلیٰ جام کمال کی حکومت پر تنقید کے جواب میں  بلوچستان حکومت کے ترجمان نے کہا ہے کہ اُن کے شکوے شکوے ہی رہیں گے،بلوچستان کابینہ میں کسی نےعبدالقدوس بزنجو کی حمایت نہیں کی ہے،عبدالقدوس بزنجو سےمتعلق پارٹی اپنا موقف دے گی۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد