شمالی کوریا کے ایک سفارت کار کی جنوبی کوریا میں پناہ 

شمالی کوریا کے ایک سفارت کار کی جنوبی کوریا میں پناہ 
شمالی کوریا کے ایک سفارت کار کی جنوبی کوریا میں پناہ 

  

سیول (رضا شاہ)شمالی کوریا کے ایک اعلیٰ عہدے دار سفارت کار نے جنوبی کوریا میں پناہ لے لی۔

مےال بزنس روزنامے کے مطابق ریو ہن او کویت میں قائم مقام سفیر تھے اور وہ ستمبر 2019 میں اپنے اہل خانہ کے ساتھ فرار ہوگئے تھے۔میڈ یارپورٹس میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے اپنے بچوں کے بہتر مستقبل کو یقینی بنانے کے لئے یہ سب کیا۔ جنوبی کوریا کے عہدیداروں نے ان خبروں کی تصدیق کرنے سے انکار کردیا ہے۔ہر سال شمالی کوریا سے تقریباً ایک ہزار افراد فرار ہوجاتے ہیں۔شمالی کوریا کے باشندوں کے لیے یا تو جنوبی کوریا کے سخت بارڈر کے رستے یا چین کے رستے فرار ہونے کے علاوہ کوئی دوسرا طریقہ نہیںہوتا۔ 

میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ خیال کیا جاتا ہے کہ ریو ہن او ستمبر 2019 میں جنوبی کوریا پہنچے تھے تاکہ وہ وہاں پناہ حاصل کرسکیں لیکن اب تک اس خبر کوخفیہ رکھا گیا تھا۔

وہ 2017 سے کویت میں شمالی کوریا کے قائم مقام سفیر تھے۔ریو ہن او شمالی کوریا کی قیادت کے خفیہ فنڈز کے انچارج دفتر کے سابق سربراہ "جون ایل چھن" کا داماد بھی ہے۔برطانیہ میں شمالی کوریا کے نائب سفیر "تھے یونگ ہو" بھی سن 2016 میں اپنے اہل خانہ کے ساتھ فرار ہوئے تھے۔ چار سال بعد انہوں نے نا صرف جنوبی کوریا میں الیکشن میں حصہ لیا بلکہ اپنے انتخابی حلقہ سے نشست بھی جیت لی تھی۔

مزید :

بین الاقوامی -