دیہی مراکز صحت، مریضوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنیکا فیصلہ

دیہی مراکز صحت، مریضوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنیکا فیصلہ

  

ملتان(وقائع نگار)محکمہ پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ پنجاب کا بڑا اقدام ملتان سمیت پنجاب بھر کے تمام دیہی مراکز صحت پر آنے والے مریضوں کا تمام تر ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ ہو گا اس سلسلہ میں نوٹیفیکیشن جاری کر دیا گیا ہے اس مراسلے کے مطابق اس (بقیہ نمبر22صفحہ6پر )

پروگرام کو الیکٹرانک میڈیکل ریکارڈ کا نام دیا گیا ہے اس میں ہر آنے والے مریض کا الگ الگ ریکارڈ محفوظ رکھا جائے گا اور پنجاب بھر کے تمام دیہی مراکز صحت کے آٹ ڈور میں یکم فروری سے الیکڑانک میڈیکل ریکارڈ کے تحت کام شروع کر دیا جائے گا دیہی مرکز صحت کا میڈیکل آفیسر اور ڈسپنسر وہاں آنے والے کی تمام تر تشخیصی ٹیسٹوں کی رپورٹ ۔اس کی بیماری ۔اور بیماری کے مرض کی نوعیت کیا ہے اور ڈاکٹر کی جانب سے دی جانے والی دوا کے نسخے کے ریکارڈ کو الیکٹرانک میڈیکل ریکارڈ میں محفوظ کریں گے تاکہ جب وہ مریض دوبارہ سے ہسپتال آئے یا کسی دوسرے ہسپتال علاج کے لئے جائے تو وہ متعلقہ مرکز صحت کے اس الیکٹرانک میڈیکل ریکارڈ سے اس کے مرض کی سابقہ ہسٹری کو معلوم کر سکے اور اس کا آگے بہتر علاج کر سکے تمام اضلاع کے سی ای اوز ہیلتھ اس سارے عمل کی خود نگرانی کریں گے مرکز صحت کے میڈیکل آفیسرز اور ڈسپنسرز اپنے شناختی کارڈ کے نمبر سے اس ایپ کو لوگ ان کریں گے تمام اضلاع کے سی ای اوز ہیلتھ ماہانہ بنیادوں پر اس حوالے سے کانفرنس یا میٹنگ بھی طلب کریں گے اس سلسلہ میں تمام مراکز صحت کے میڈیکل آفیسرز اور ڈسپنسرز کو سم اور ٹیبلیٹس بھی فراہم کئے جائیں گے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -