تحریک انصاف قومی اسمبلی سے آﺅٹ،مزید 43استعفے منظور

  تحریک انصاف قومی اسمبلی سے آﺅٹ،مزید 43استعفے منظور

  

       اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں) پاکستان تحریک انصاف کے مزید 43 ارکان قومی اسمبلی کے استعفے منظور کر لئے گئے۔ سپیکر قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی ارکان کے استعفے منظور کر کے الیکشن کمیشن کو بھجوا دیئے، پی ٹی آئی کے اب تک 124 ارکان کے استعفے منظور کر لئے گئے۔جن ارکان اسمبلی کے استعفے منظور کئے گئے ان میں ریاض فتیانہ ، سردار طارق حسین ، محمد یعقوب شیخ ، مرتضی اقبال ،سردار محمد خان لغاری، حاجی امتیاز چوہدری، لال چند اور جواد حسین شامل ہیں۔نوشین حامد، منزہ حسن، صائمہ ندیم ، تاشفین صفدر، صوبیہ کمال خان، ظل ہما، رخسانہ نوید کا استعفیٰ بھی منظور، غزالہ سیفی اورطارق صادق بھی لسٹ میں شامل ہیں، سپیکر قومی اسمبلی نے گزشتہ 8 روزکے اندر113 استعفی منظور کئے۔پاکستان تحریک انصاف کے دو ارکان چھٹی کی درخواست کے باعث بچ گئے، سردار طالب نکئی اور نواز الائی کے استعفے منظور نہ ہوئے، سپیکر نے مزید 43 استعفے پرانی تاریخوں میں منظورکئے، پی ٹی آئی کے 20 منحرف ارکان ایوان کا حصہ ہیں۔یاد رہے کہ پی ٹی آئی اراکین قومی اسمبلی نے گزشتہ روز استعفے واپس لینے کیلئے الیکشن کمیشن کو ای میلز کی تھیں۔پی ٹی آئی اراکین قومی اسمبلی کے استعفے چار مرحلوں میں منظور کئے گئے، پہلے میں 11، دوسرے اور تیسرے مرحلے میں 35، 35اور پھر 43 استعفے منظور کئے گئے ہیںدوسری طرف پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چودھری نے پارٹی ارکان کے مزید استعفے منظور کئے جانے پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ سپیکر نے راجا ریاض کو بچانے کے لیے یہ اقدام کیا۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں فواد چودھری نے کہا کہ محدود تعداد میں اسمبلی جانے کا مقصد راجا ریاض کو اپوزیشن لیڈرکے عہدے سے فارغ کرنا تھا، اس قومی اسمبلی کی کوئی نمائندہ حیثیت نہیں کہ اس میں واپس جائیں۔انہوں نے کہا کہ اس وقت شہباز حکومت 172 لوگوں کی حمایت کھو چکی ہے، امپورٹڈ وزیراعظم حکومت بچانے کے لئے لوٹوں پر انحصار کر رہے ہیں جب کہ راجا ریاض کو بچانے کے لئے سپیکرکے اقدامات کے نتیجے میں 40 فیصد نشستیں خالی ہوچکی ہیں۔سابق وزیر کا کہنا تھا کہ ملک انتخابات کے مزید قریب آگیا ہے، اس بحران کا واحد حل قومی انتخابات ہیں، حکومت کتنا عرصہ عوام سے کترائے گی، آخر فیصلہ لوگوں نے کرنا ہے اور فیصلہ ووٹ سے ہوگا۔دریں اثنا پی ٹی آئی اراکین قومی اسمبلی چیف جسٹس سے ملاقات کیلئے سپریم کورٹ پہنچے، اراکین کو ملاقات کی اجازت نہ مل سکی۔رجسٹرار سپریم کورٹ نے بھی پاکستان تحریک انصاف کے اراکین سے ملاقات سے انکار کر دیا، چیف جسٹس سے ملاقات کیلئے آنے والے اراکین قومی اسمبلی کی تعداد 8 تھی۔ پی ٹی آئی رہنما عامر ڈوگر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چیف جسٹس سے اراکین کے استعفوں سے متعلق ملنا چاہتے ہیں، سپریم کورٹ نے اسمبلی واپس جانے کا کہا تو استعفے منظور کر لیے گئے۔

استعفے منظور

مزید :

صفحہ اول -