پشاور یونیورسٹی کا قوانین پر عملدرآمد نہ کرنےوالے 25 کالجز سے الحاق کا خاتمہ 

پشاور یونیورسٹی کا قوانین پر عملدرآمد نہ کرنےوالے 25 کالجز سے الحاق کا خاتمہ 

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پشاور یونیورسٹی سے الحا ق شدہ پچیس کالجز کا الحاق جامعہ پشاور کے مجوزہ قوانین کی پابندی نہ کرنے پر ختم کر دیا گیا ہے اس بات کا فیصلہ جامعہ پشاور کے ایفیلیشن کمیٹی کے 45ویں منعقدہ اجلاس میں کیا گیا جو زیر صدارات وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد ادریس منعقد ہوا اجلاس میں پرو وائس چانسلر جامعہ پشاور پروفیسر ڈاکٹر زاہد انور، ریجسٹرار سیف اللہ خان، اسسٹنٹ ریجسٹرار اکیڈیمکس اور افیلیشن ڈاکٹر سر بلند خان نے بھی شرکت کی۔اجلاس میں صوبہ خیبر پختونخوا کے پچیس کالجز کا الحاق ختم کردیا گیا، جسمیں سے اکیس جامعہ پشاور کے بی ایڈ جبکہ چار بی ایس اور بزنس پروگرامز سے ملحقہ تھے۔جامعہ پشاور کے بی ایڈ پروگرام سے الحاق ختم ہونے والے کالجز میں ایبٹ کالج آف ایجوکیشن، ایبٹ آباد، الفا کالج آف ایجوکیشن، مردان، آرمی کالج آف ایجوکیشن، پشاور، ایوی سینا کالج آف ایجوکیشن، ملاکنڈ ایجنسی، برینز پوسٹ گریجویٹ کالج، پشاور، کیپیٹل انسٹیٹوٹ آف ایجوکیشن، حیات آباد، پشاور، سینا کالج آف ایجوکیشن، پبی، نوشہرہ، ڈان کالج آف ایجوکیشن، ہنگو، فاطمہ جناح کالج آف ایجوکیشن، ہری پور، ہزارہ کالج آف ایجوکیشن، ایبٹ آباد، انسٹیٹوٹ آف کمپیوٹر اینڈ منیجمنٹ سائنسز، پشاور، جناح کالج آف ایجوکیشن، مانسہرہ، مردان کالج آف ایجوکیشن، مردان، محمڈن انسٹیٹوٹ آف ایجوکیشن، نوشہرہ، نوشہرہ کالج آف ایجوکیشن، نوشہرہ، سوات روبیکان سکول اینڈ کالج، سوات، شاہین کالج آف ایجوکیشن، پشاور، سر سید کالج آف ایجوکیشن، مردان، سوات کالج آف ایجوکیشن، سوات، تخت بھائی کالج آف ایجوکیشن، مردان، اشفا انسٹیٹوٹ آف ایجوکیشن سائنسز، پشاور شامل ہیںجبکہ نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ماڈرن سائنسز، رینگ روڈ، پشاور کو بی ایس اکنامکس اور بی بی اے پروگرام، غلام یوسف ایجوکیشن سسٹم، پشاور کو بی بی اے پروگرام، نیشنل انسٹیٹوٹ آف کلچرل سٹڈیز، آسلام آباد کو بی بی اے، بی ایس جرنلزم اینڈ ماس کمیونیکیشن اور بی ایس آرٹ اینڈ ڈیزائن پروگرام،گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج، تیمرگرہ، اور لوئر دیر کو بی ایس اردو پروگرام کے الحاق کو ختم کر دیا گیا۔واضح رہے کہ مذکورہ بالا تعلیمی اداروں کی الحاق جامعہ پشاور کی مجوزہ قوانین کی پابندی نہ کرنے کی بنا کی گئی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -