اے جی آفس میں ہڑتال، سینکڑوں سرکاری ملازمین کو تنخواہوں کی ادائیگی رکنے کا خطرہ

اے جی آفس میں ہڑتال، سینکڑوں سرکاری ملازمین کو تنخواہوں کی ادائیگی رکنے کا ...

  

کی ادائیگی رکنے کا خطرہ

لاہور (اپنے نمائندے سے) اے جی آفس میں جاری ہڑتال اور اے جی پنجاب کی بر وقت تعیناتی نہ ہونے کے باعث سینکڑوں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں کی مد میں بننے والے سو کروڑ روپے کی رقوم خطرے میں پڑ چکی ہے معلوم ہوا ہے کہ اے جی آفس میں مختلف سرکاری محکمہ جات کے 48 پرسنل لیجر اکاﺅنٹس استعمال ہو رہے ہیں اور 250 اسپیشل ڈرائنگ اکاﺅنٹ بھی کھلے ہوئے ہیں جن میں ضلع لاہور کے تمام سرکاری ہستپالوں سمیت چڑیا گھر، ٹیوٹا، میوزیم، ریونیو، پولیس، ایجوکیشن، صحت، انٹی کرپشن، ایل ڈی اے، اوقاف اور دیگر محکمہ جات کے ملازمین کی ادائیگی انہی اکاﺅنٹس کے ذریعے کی جا رہی تھی تاہم ایک طرف اے جی آفس میں جاری مسلسل ہڑتالوں کی وجہ سے ان اکاﺅنٹس سے تنخواہوں کی ریلیز کا معاملہ پہلے ہی تاخیر کا شکار ہو چکا ہے اور بعد ازاں اے جی پنجاب کی تبدیلی اور نئے آنیوالے اے جی کی بروقت تعیناتی نہ ہونے کے باعث سینکڑوں ملازمین کی تنخواہوں کی مد میں بننے والے سو کروڑ سے زائد رقوم خطرے میں پڑ چکی ہے اور اس ضمن میں محکمہ فنانس کے ذمہ دار افسران کا کہنا ہے کہ جب تک اے جی پنجاب کی باقاعدہ تحریری اجازت وصول نہیں ہو جاتی تب تک ان اکاﺅنٹ سے ایک پائی بھی ریلیز کرنے کی اجازت ہرگز نہ دیں گے اور ابھی تک ہمیں نہ تو اے جی پنجاب کی جانب سے کوئی تحریری اجازت نامہ وصول ہوا ہے جس سے خدشہ ہے کہ ان کاﺅنٹس میں ادائیگیاں نہیں کی جا سکیں گی

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -