احتجاج کیوں کیا‘250مظاہرین کے خلاف دہشتگردی کا مقدمہ

احتجاج کیوں کیا‘250مظاہرین کے خلاف دہشتگردی کا مقدمہ

  

لاہور (جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت میں ”بوند بوند“ پانی کی تلاش میں جی ٹی روڈ پر آنے والے باغبانپورہ کے 250 پیاسے شہریوں کے خلاف واسا نے دہشت گردی کا مقدمہ درج کرا دیا ہے مقدمہ ایم ڈی واسا میاں عبداللہ کی ہدایت پر واسا ایس ڈی او باغبانپورہ ریاض احمدنے تھانے باغبانپورہ میں درج کرایا ہے جس میں واسا کے سب ڈویژن باغبانپورہ پر حملہ کرنے کا شہریوں پر الزام لگایا گیا ہے اور حملہ کے دوران واسا کے ایس ڈی او ریاض نے اپنے تین ملازمین کلرک شاہد سیکورٹی گارڈ،اسلم اور رشید کو زخمی ظاہر کیا ہے حالانکہ تینوں اہلکاروں کو خراش تک نہیں آئی۔ مقدمہ درج ہونے کی تصدیق واسا کے مذکورہ ایس ڈی او نے اس انداز میں کی ہے کہ انہوں نے موقف دیتے ہوئے کہا کہ پانی نہ آنے کی بنیادی وجہ لوڈشیڈنگ ہے جب عوام ہمیں پتھر ماریں گے تو کیا ہم ان کے گلوں میں ہار ڈالیں گے مقدم ذرائع نے بتایا ہے کہ گزشتہ دنوں باغبانپورہ کی آبادیوں گلشن شالیمار، مدینہ کالونی، غوثیہ کالونی محمد علی پارک ،مدینہ کالونی، کالج پارک ،عمر پارک اسلام پورہ سکیمز مدھو لال حسین کے رہائشیوں نے علاقوں میں پانی کی مسلسل بندش کے خلاف جی ٹی روڈ اور واسا ڈویژن باغبانپورہ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور پانی پانی کے حق میں نعرے لگائے اس دوران مظاہرین ن میڈیا کو بتایا کہ ایک مہینہ سے پانی کی بندش سے لوگ بوند بوند کو ترس گئے ہیں۔ علاقے میں چار مقامات گلشن شالیمار، باغبانپورہ سب ڈویژن عالیہ ٹاﺅن مادھو لال حسین اور پاکستان منٹ کے مقام پر ٹیوب ویلوں پر جنریٹر لگائے گئے ہیں،جنہیں روزانہ تیل دینے کے لئے گاڑی آتی ہے مگر جنریٹر چلائے نہیں جاتے اس پر انہوں نے واسا سب ڈویژن کے سامنے بھی ایم ڈی واسا اور ایس ڈی او کے خلاف نعرے بازی ہوئی جس کا بدلہ لینے کے لئے ایس ڈی او نے ایم ڈی واسا کی اجازت سے 250 مقامی رہائشیوں جو پانی مانگنے سڑک پر آئے تھے ان کے خلاف مقدمہ درج کرا دیا ہے۔ ان میںسے 7 شہریوں جن میں شوکت محمود، محمد علی، کوثر شاہ، مشتاق یاسر، کالا محمد ریاض ولد نامعلوم کو نامزد کرایا ہے جبکہ بقایا 143 نامعلوم مظاہرین کے خلاف مقدمہ درج کرایا گیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -