لاہور ہائیکورٹ کے سابق چیف جسٹس قتل سازش کی ایف آئی آر سامنے آگئی

لاہور ہائیکورٹ کے سابق چیف جسٹس قتل سازش کی ایف آئی آر سامنے آگئی

  

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ) لاہور ہائیکورٹ کے سابق چیف جسٹس کے قتل کی سازش کی ایف ٓائی آر منظر عام پر آگئی ہے جس کے مطابق یہ مقدمہ ایف آئی اے کے ایک سیکشن افسر حاکم دین کی طرف سے درج کرایا گیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ سازش کی تحقیقات کیلئے قائم کیے جانے والے کمیشن نے سولہ اہم گواہوں کے بیانات لئے جبکہ کرنل رحمان اور ڈائریکٹر محمود نے ایف آئی اے سے جھوٹ بولنے کا اعتراف کیا۔ جن سے تفتیش کی گئی وہ سب رپورٹس میں جھوٹ بولتے رہے۔ قتل کی سازش سے متعلق کوئی سرکاری فائل سپیشل برانچ میں موجود نہیں تھی۔ یہ امر حیران کن ہے کہ اہم رپورٹ پر کسی نے دستخط نہیں کئے تھے ۔

مزید :

صفحہ آخر -