بلوچستان میں آئینی بریک ڈاون ہوگیا ‘عدالتی حکم پر عمل نہیں ہورہا سپریم کورٹ

بلوچستان میں آئینی بریک ڈاون ہوگیا ‘عدالتی حکم پر عمل نہیں ہورہا سپریم کورٹ

  

اسلام آباد (خبر نگار، این این آئی)سپریم کورٹ آف پاکستان نے بلوچستان میں امن وامان کیس کی سماعت کے دور ان صوبے کے حالات پر وفاق ¾ صوبائی حکومت کی مجاز انتظامیہ سے جواب طلب کرلیا ہے جبکہ چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے صوبائی چیف سیکرٹری کے نہ آنے پرسخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بلوچستان میں آئینی بریک ڈاﺅن ہوگیا ہے ¾ آئین کا نفاذ نہیں ہورہا، عدالتی حکم پر عمل نہیں ہورہا،بظاہر انتظامی مشینری، عملدر آمد کرانے میں ناکام رہی ¾ کوئی فورس، بشمول آئی ایس آئی ، ایم آئی کام نہیں کررہی، چھ ماہ سے کہہ رہے ہیں مگر نتیجہ صفر ہے،چیف سیکرٹری کو لکھ کر دینا ہوگا امن و امان میں ناکام ہوگئے۔منگل کو چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کی تو صوبائی چیف سیکریٹری کے نہ آنے پر ججز نے اظہار ناراضگی کیاسماعت کے دور ان سپریم کورٹ نے بلوچستان میں انتظامی مشینری کو ناکام قرار دیتے ہوئے کہاکہ وہاں آئین کا نفاذ ہورہا نہ ہی عدالتی حکم پر عمل ہورہاہے، چیف جسٹس افتخارمحمدچودھری نے کہاکہ بلوچستان میں آئینی بریک ڈاﺅن ہوگیا ہے، اب قانون نے جو اجازت دی وہ عدالت لکھ دے گی۔ چیف جسٹس نے کہاکہ فیصلے پر عمل نہیں ہورہا، ہم وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری کو بلالیتے ہیں، کسی ایک کیس کو سول، پولیس ، ایف سی ، آرمی والے حل نہیں کرسکے، صوبائی سیکرٹری داخلہ نے کان کنوں کے اغوا و قتل واقعہ پر انکوائری رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہاکہ حالیہ آپریشن ٹھیک ہوا،2 ملزم گرفتار کرلئے ہیں، ماہ رمضان کی وجہ سے تحمل برتا ہے، ایجنسیوں کے وکیل راجا ارشاد نے بتایاکہ کوسٹ گارڈ پر حملہ ، ایف سی کی یونیفارم پہنے لوگوں نے کیا، چیف جسٹس نے کہاکہ سیدھا کہیں کچھ نہیں ہوا، آپ لوگوں نے ہاتھ کھڑے کردیئے ہیں، کوئی فورس، بشمول آئی ایس آئی ، ایم آئی کام نہیں کررہی، چھ ماہ سے کہہ رہے ہیں لیکن نتیجہ صفر ہے،چیف سیکرٹری کو لکھ کر دینا ہوگا کہ امن و امان میں ناکام ہوگئے،تین افراد کے اغوا پر ایف سی کے آفیسر ، پولیس کو جاکر سرنڈر کریں ، بعد میں عدالت نے ان حالات پر وفاقی،صوبائی حکومت کی مجاز انتظامیہ سے جواب طلب کرتے ہوئے آرڈر میں لکھا کہ آئین کا نفاذ نہیں ہورہا، عدالتی حکم پر عمل نہیں ہورہا،بظاہر انتظامی مشینری، عملدر آمد کرانے میں ناکام رہی ہے ، مقدمہ کی مزید سماعت(آج) بدھ کو ہوگی۔

مزید :

صفحہ اول -