اولمپکس کھیلنے والے روزہ چھوڑ سکتے ہیں: ملائیشین مفتی کا فتویٰ

اولمپکس کھیلنے والے روزہ چھوڑ سکتے ہیں: ملائیشین مفتی کا فتویٰ

  

کوالا لمپور(جی این آئی) ملا ئیشیاءکے اسلامی اور اولمپک حکام نے کہا ہے کہ اس غالب اکثریتی مسلم ملک کے ایتھلیٹس لندن گیمز میں مقابلوں کے دوران رمضان کے روزے چھوڑ سکتے ہیں۔ملائیشیاءکے سب سے بڑے مذہبی ادارے قومی فتویٰ کونسل کے سینئر رکن کا کہنا ہے کہ ایتھلیٹس کھیلوں کے بعد تک اپنے روزہ کو موخر کرسکتے ہیں کیونکہ وہ قوم کے وقار کے لئے ایک بین الاقوامی مقابلے میں شریک ہیں۔ ملائیشیاءکی ریاست پراگ کے اعلیٰ مذہبی رہنما مفتی ہاروسانی زکریا نے بتایا کہ یہ لوگ قومی وقار کے لئے اولمپکس میں گئے ہیں اور ملائیشیاءواپسی پر روزہ رکھ سکتے ہیں۔ قرآن کہتا ہے کہ اگر آپ نے کوئی مشن مکمل کرنا ہے تو روزہ موخر کرسکتے ہیں لیکن آپ کو ان دنوں کے برابر بعد میں روزے رکھنا ہوں گے۔ ملائیشیاءکی لندن کھیلوں میں حصہ لینے والے 30 ایتھلیٹس میں سے 11 مسلمان ہیں۔ واضع رہے کہ لندن اولمپکس 1980ءمیں ماسکو اولمپکس کے بعد پہلی مرتبہ رمضان کے مہینے میں ہو رہے ہیں جب مسلمان روزہ رکھتے ہیں۔ رمضان کے دوران جو اختتام ہفتہ کو شروع ہوا مسلمان کھانے پینے اور جنسی تعلقات سے سورج کے غروب ہونے تک دور رہتے ہیں اور افطار کے ساتھ روزہ ختم کرتے ہیں۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -