گوادر، سی پیک سے منسلک منصوبے جلد مکمل کئے جائیں، بلوچستان میں امن و امان اور سماجی و اقتصادی ترقی حکومت کی اولین ترجیح ہے: عمران خان

      گوادر، سی پیک سے منسلک منصوبے جلد مکمل کئے جائیں، بلوچستان میں امن و ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن) وزیرِ اعظم عمران خان نے کہاہے کہ صوبہ بلوچستان میں مکمل امن و امان کو یقینی بنانا اور سماجی و اقتصادی ترقی حکومت کی اولین ترجیح ہے، بلوچستان کی عوام کے احساسِ محرومی کا مکمل ادراک ہے جس کو دور کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔وزیر اعظم کی زیر صدارت جمعہ کو نیشنل ڈویلپمنٹ کونسل (قومی ترقیاتی کونسل) کا دوسرا اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں وفاقی وزراء شاہ محمود قریشی، اسد عمر، محمد حماد اظہر، علی حیدر زیدی، عمر ایوب خان، مشیر ان خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، عبدالرزاق داؤد، وزیرِ اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان شریک ہوئے۔ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ اورڈی جی آئی ایس آئی لیفٹنٹ جنرل فیض حمید،معاون خصوصی لیفٹنٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ، و دیگر اعلیٰ حکام نے بھی شرکت کی۔اجلاس میں قومی ترقیاتی ایجنڈہ خصوصاً بلوچستان کے پس ماندہ اور دوردراز علاقوں میں آمدو رفت، آبی وسائل کے بہتر استعمال، زراعت، توانائی، بارڈر مارکیٹوں کے قیام اور گوادر پورٹ سے مکمل طور پر استفادہ کے لئے مختلف منصوبے زیر غور آئے۔بلوچستان کے پسماندہ علاقوں کی ترقی کے حوالے سے وزیرِ اعظم نے بات کرتے ہوئے کہا کہ صوبہ بلوچستان میں مکمل امن و امان کو یقینی بنانا اور سماجی و اقتصادی ترقی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں بلوچستان کو مالی وسائل تو فراہم کیے گئے لیکن عوام کی فلاح و بہبود کے لئے ان کے مناسب استعمال کو یکسر نظر انداز کیا جاتا رہا جس سے نہ صرف صوبے کا بڑا حصہ پس ماندگی کا شکار رہا بلکہ عوام میں احساس محرومی نے جنم لیا۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ ہمیں بلوچستان کی عوام کے احساسِ محرومی کا مکمل ادراک ہے جس کو دور کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ گوادر کی تعمیر و ترقی کا منصوبہ نہ صرف بلوچستان بلکہ پورے علاقے کے لئے گیم چینجر کی حیثیت رکھتا ہے گوادر اور سی پیک مستفید ہونے کے لئے اس سے منسلک منصوبے جلد مکمل کئے جائیں۔ بلوچستان میں روڈ نیٹ ورک، عوام اور خصوصاً نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے اور انفراسٹرکچر کے قیام پر خصوصی توجہ دی جائے۔ اس ضمن میں وزیرِ اعظم نے وزیر منصوبہ بندی، مشیر خزانہ اور وزیرِ اعلیٰ بلوچستان پر مشتمل کمیٹی کے قیام کی ہدایت کی ہے جو کمیونیکیشن، زراعت، توانائی اور دیگر مجوزہ منصوبوں کا جائزہ لیکر ترجیحات مرتب کرکے وزیرِ اعظم کو پیش کریں گے۔ بلوچستان میں معدنی وسائل کی استعداد کو برؤے کار لانے اور فروغ کے کے لئے بلوچستان منرل ایکسپلوریشن کمپنی کے قیام کی منظوری بھی دی گئی۔وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ عوام کو عیدالاضحی کے موقع پر بھی کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے ایس اوپیز پر عمل کرناہوگا کیونکہ آئندہ ایک دو ماہ بہت اہم ہیں،صوبے مہنگائی کی روک تھام کے لئے ذخیرہ اندوزی کی روک تھام کیلئے کریک ڈاؤن کریں اور کسی کوبھی اشیاء خوردونوش کی قلت پیدا کرنے کی اجازت نہ دی جائے۔ وزیر اعظم نے ان خیالات کا اظہار وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار،، وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان اور گورنر خیبر پختونخوا شاہ فرمان سے ملاقات میں کیا ۔ جنہوں نے جمعہ کو اسلام آباد میں ان سے الگ الگ وزیر اعظم آفس میں ملاقات کی۔گورنر اور وزیر اعلی خیبر پختونخوا سے صوبہ خیبرپختونخوا کی مجموعی صورتحال اور ترقیاتی منصوبوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ذرائع کے مطابق ملاقات میں ملک کی موجودہ سیاسی و سیکورٹی صورتحال،کوروناوائرس سے نمٹنے کیلئے اقدامات،پارٹی امور ،بلین ٹری منصوبے سمیت دیگر اہم امور بھی زیر بحث آئے۔گورنر و وزیر اعلی کے پی کے نے وزیر اعظم کو صوبہ میں ترقیاتی منصوبوں میں پیش رفت کے ساتھ ساتھ عید الاضحی اور محرم الحرام کے موقع پر کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے ایس اوپیز پر عملدرآمد کے حوالے سے اقدامات بارے بھی آگا ہ کیا۔ وزیر اعلی پنجاب سے گفتگو کے دوران وزیر اعظم نے صوبہ میں گندم اور آٹے کی دستیابی کو یقینی بنانے کے احکامات جاری کئے ۔وزیر اعظم نے کہا کہ کسی کوبھی آٹے کی قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے دیا جائے،جو عناصر ذخیر اندوزی کرکے قلت پیدا کرنا چاہتے ہیں انکے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔صوبہ میں امن وامان کی صورتحال اور ترقیاتی امور پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔

وزیر اعظم

مزید :

صفحہ اول -